دوبئی حکومت کا بڑا فیصلہ: نجی سکولوں کی فیسیں نہیں بڑھائی جائیں گی

اماراتی اور غیر ملکی باشندوں کی جانب سے فیصلے کا خیر مقدم

Muhammad Irfan محمد عرفان جمعرات جون 14:03

دوبئی حکومت کا بڑا فیصلہ: نجی سکولوں کی فیسیں نہیں بڑھائی جائیں گی
ابو ظہبی (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ 7 جُون 2018ء) متحدہ عرب امارات میں پچھلے کچھ سالوں سے مہنگائی میں بہت اضافہ دیکھنے کو آ رہا ہے۔ جس سے نہ صر ف اماراتی بلکہ روزگار کے سلسلے مقیم تارکینِ وطن بھی پریشان نظر آتے ہیں۔ کچھ عرصہ قبل تیل کی قیمتوں میں اضافے پر شہری بہت دُکھی اور افسردہ نظر آ رہے تھے۔ اور اُن کا موقف تھا کہ اُنہیں روزگار کے سلسلے میں دُور دراز مقامات کا رُخ کرنا پڑتا ہے جس کے باعث اُن کے سفری اخراجات میں خاصا اضافہ ہو گیا تھا جس کا اثر اُن کے ماہانہ بجٹ پر پڑا تھا۔

متحدہ عرب امارات میں رہائش گاہوں کا کرایہ بھی روز بروز بڑھتا ہی جا رہا ہے ۔ جو خاص طور پر غیر مُلکیوں کے لیے پریشانی کا باعث ہے۔ اس مملکت میں بڑی تعداد میں غیر ملکی اپنے بیوی بچوں کے ساتھ رہائش پذیر ہیں جن کے بچے مقامی سکولوں میں زیر تعلیم ہیں۔

(جاری ہے)

ان کے تعلیمی اخراجات بھی ماہانہ اخراجات کا حصّہ ہوتے ہیں۔ گزشتہ روز دوبئی ایگزیکٹو کونسل کی جانب سے اعلان کیا گیا کہ والدین پر معاشی بوجھ گھٹانے کے لیے 2018-2019ء کے تعلیمی سال کے دوران پرائیویٹ سکولوں کی فیسوں میں اضافہ نہیں کیا جائے گا۔

دوبئی کے ولد عہد‘ شیخ حمدان بن محمد بن راشد المکتوم جو دوبئی ایگزیکٹو کونسل کے چیئرمین بھی ہیں‘ اُنہوں نے اس حوالے سے نالج اینڈ ہیومن ڈویلپمنٹ اتھارٹی کو ہدایت جاری کی ہے کہ اس فیصلے کا اطلاق فوری طور پر کر کے والدین اور نجی سکولوں کو آگاہ کر دیا جائے۔ اپنے اہل و عیال کے ساتھ غیر ملکی باشندوں کی جانب سے اس فیصلے کو سراہتے اس پر بہت خوشی کا اظہار کیا گیا ہے۔

اُن کا کہنا ہے کہ اس سے ہمیں اپنے بچوں کو تعلیم دلوانے میں پریشانی کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا اور ہمارے گھریلو بجٹ قابو میں رہے گا۔ اگر نجی سکولوں کی فیسوں میں اضافہ کر دیا جاتا تو اس سے والدین پر بے پناہ معاشی بوجھ پڑ جاتا جس سے اُن کی ملازمت کے دوران ذہنی یکسوئی متاثر ہوتی اور وہ اپنے دفتری فرائض کی ادائیگی میں پریشانی کا سامنا کرتے۔