نگران وزیر اعلی پنجاب الیکشن ملتوی کرنے کے حامی نکلے

جون جولائی اور اگست میں کبھی بھی پاکستان میں عام انتخابات نہیں ہو سکتے،نگران وزیراعلی پنجاب حسن عسکری نے 24 اپریل کو لکھے گئے آرٹیکل میں الیکشن کی تاریخ میں توسیع کی وجہ گرمی ،بارش اور سیلاب کو قرار دیا تھا

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعرات جون 15:38

نگران وزیر اعلی پنجاب الیکشن ملتوی کرنے کے حامی نکلے
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔07 جون 2018ء) نگران وزیر اعلی پنجاب الیکشن ملتوی کرنے کے حامی نکلے۔ نگران وزیراعلی پنجاب حسن عسکری نے 24 اپریل کو لکھے گئے آرٹیکل میں الیکشن کی تاریخ میں توسیع کی وجہ گرمی ،،بارش اور سیلاب کو قرار دے دیا تھا۔تفصیلات کے مطابق آج الیکشن کمیشن نے پروفیسر ڈاکٹر حسن عسکری کو نگران وزیراعلیٰ پنجاب مقرر کردیا تھا۔

نجی ٹی وی چینل کی ایک رپورٹ کے مطابق نگران وزیر اعلی پنجاب حسن عسکری بھی انتخابات کے ملتوی ہونے کے حامی نکلے۔۔ڈاکٹر حسن عسکری اپنے ایک آرٹیکل میں عام انتخابات کے دو تین ماہ تک ملتوی کرنے کی تجویز دے چکے ہیں۔۔تحریک انصاف کی تجویز پر نامزد ڈاکٹر حسن عسکری 24اپریل کو اپنے لکھے گئے ایک آرٹیکل میں الیکشن میں توسیع کی وجہ گرمی،،،بارش اور سیلاب کو قرار دے چکے ہیں ۔

(جاری ہے)

ڈاکٹر حسن عسکری نے اپنے تجزیاتی آرٹیکل میں یہ بھی لکھا ہے کہ جون جولائی اور اگست میں کبھی بھی پاکستان میں عام انتخابات نہیں ہو سکتے۔ انھوں نے مزید کہا کہ کچھ لوگ الیکشن سے قبل سیاستدانوں کے خلاف جاری تحقیقات کی تکمیل بھی چاہتے ہیں۔ حلقہ بندیوں کے معاملات کے التواء کو بھی جواز بنایا تھا۔یاد رہے کہ ن لیگ نے بطورنگران وزیراعظم حسن عسکری کے نام پر تنقید کی تھی اور کہا تھا کہ سابق وزیر قانون پنجاب رانا ثنااللہ کا کہنا ہے کہ پروفیسر حسن عسکری کی بطور نگراں وزیر اعلیٰ پنجاب تقرری پر شدید تحفظات ہیں، بدقسمتی ہے کہ جس شخص نے ایک اسکول نہیں چلایا وہ صوبہ چلائے گا۔

پروفیسر حسن عسکری کی بطور نگراں وزیر اعلیٰ پنجاب تقرری پراپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہ کہ حسن عسکری مسلم لیگ ن اور اس کی قیادت کے خلاف باتیں کرتے رہے ہیں۔اور وہ جمہوریت پر یقین نہیں رکھتے۔