سعودی عرب اورامارات مابین تعاون کے 20 معاہدے طے پا گئے

44 سٹرٹیجک منصوبوں کی منظوری،عوامی فلاح و بہبود مقاصد میں شامل، استحکام و اتحاد ہمارے تحفظ کا ضامن ہے

جمعرات جون 16:16

ریاض/ابو ظہبی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 جون2018ء) سعودی عرب اورامارات مابین تعاون کے 20 معاہدے طے پا گئے،مشترکہ معاشی، ترقیاتی اور عسکری سوچ کے مظہر 44 سٹرٹیجک منصوبوں کی منظوری دے دی گئی، عوام کی فلاح وبہبود اور مسرت کا حصول بھی کونسل کے مقاصد میں شامل ہے،دونوں ملکوں کا استحکام اور اتحاد دراصل ہمارے مفادات کے تحفظ کا ضامن ہے۔بین الاقوامی میڈیا کے مطابق متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب نے دونوں ملکوں کی مشترکہ معاشی، ترقیاتی اور عسکری سوچ کے مظہر 44 سٹرٹیجک منصوبوں کی منظوری دی ہے۔

ان منصوبوں کی منظوری جدہ میں سعودی عرب اور یو اے ای کی کوارڈی نیشن کونسل کے پہلے اجلاس میں دی گئی جس کی صدارت ابوظہبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زاید اور سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے کی۔

(جاری ہے)

اجلاس میں سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کوارڈی نیش کونسل کے تنظیمی ڈھانچے کا اعلان کیا گیا۔ اس کونسل کا مقصد اہدافی منصوبوں اور پروگرامات پر عمل درآمد کی رفتار اور تعاون کو تیز کرنا ہے۔

کونسل کے اہداف میں عالمی سطح پر دونوں ملکوں کی معیشت، انسانی ترقی، سیاسی، سیکیورٹی اور عسکری تعاون کے انڈیکس کو بڑھاوا دینا شامل ہے۔ نیز دونوں ملکوں کے عوام کی فلاح وبہبود اور مسرت کا حصول بھی کونسل کے مقاصد میں شامل ہے۔اجلاس کے اختتام پر شیخ محمد بن زاید نے کہا کہ ہم تاریخ کے غیر معمولی دوراہے پر کھڑے ہیں جہاں ہمارے پاس عرب تعاون کا ایک انتہائی اہم نمونہ پیش کرنے کا موقع ہے۔ دونوں ملکوں کا استحکام اور اتحاد دراصل ہمارے مفادات کے تحفظ کا ضامن ہے۔ اس سے ہماری معیشت مضبوط ہو گی جس سے دونوں ملکوں کے عوام کا مستقبل بہتر بنانے کا موقع ملے گا۔