چیف جسٹس کی عافیہ صدیقی کی زندگی سے متعلق رپورٹ جمع کرانے کی ہدایت

عافیہ صدیقی کی زندگی کے بارے میں متضاد اطلاعات آرہی ہیں، اٹارنی جنرل اور امریکہ میں پاکستانی سفارتخانہ معلوم کر کے بتائیں عافیہ صدیقی کی کیا حالت ہے چیف جسٹس

جمعرات جون 16:44

چیف جسٹس کی عافیہ صدیقی کی زندگی سے متعلق رپورٹ جمع کرانے کی ہدایت
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 جون2018ء) چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے امریکہ میں قید پاکستانی شہری عافیہ صدیقی کی موت سے متعلق گردش کرنے والی رپورٹس پر اٹارنی جنرل اور امریکا میں پاکستانی سفارتخانے کو ہدایت کی ہے کہ 3 دن کے اندر عافیہ صدیقی سے زندگی سے متعلق رپورٹ عدالت میں جمع کرائیں۔۔سپریم کورٹ میں چیف جسٹس کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی زندگی اور پاکستان منتقل کرنے سے متعلق ان کی ہمشیرہ ڈاکٹر فوزیہ صدیقی کی درخواست پر سماعت کی۔

عدالت میں فوزیہ صدیقی نے بتایا کہ میڈیا کے ذریعے پتہ چلا ہے کہ امریکا میں پاکستانی قونصل جنرل نے عافیہ صدیقی سے ملاقات کی ہے لیکن جب ان سے اس بات کا سرٹیفکیٹ مانگا گیا تو انہوں نے وہ فراہم نہیں کیا۔

(جاری ہے)

سماعت کے دوران چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ عافیہ صدیقی کی زندگی کے بارے میں متضاد اطلاعات آرہی ہیں، اٹارنی جنرل اور امریکا میں پاکستانی سفارتخانہ معلوم کرکے بتائیں کہ عافیہ صدیقی کی کیا حالت ہے۔

خیال رہے کہ اس سے قبل کچھ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی موت سے متعلق افواہیں گردش کررہی تھیں،جس کے بعد 23 مئی کو امریکی ریاست ٹیکساس میں موجود پاکستانی قونصل جنرل عائشہ فاروق نے کارس ویل، ٹیکساس میں فیڈرل میڈیکل سینٹر (ایف ایم سی ) میں موجود جیل میں عافیہ صدیقی سے 2 گھنٹے تک ملاقات کی تھی۔اس ملاقات کے بعد ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی موت سے متعلق گردش کرنے والی افواہیں دم توڑ گئی تھیں اور پاکستانی قونصل جنرل کی جانب سے ان افواہوں کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہوئے اسے جھوٹا اور بے بنیاد قرار دیا گیا تھا۔

ہیوسٹن میں موجود پاکستانی قونصلیٹ جنرل کی جانب سے کہا گیا تھا کہ گزشتہ 14 ماہ کے دوران پاکستانی قونصل جنرل 4 مرتبہ ڈاکٹر عافیہ صدیقی سے ملاقات کرچکی ہیں تاہم اس بارے میں ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی ہمشیرہ ڈاکٹر فوزیہ صدیقی کا کہنا تھا کہ وہ اپنی بہن کی زندگی اور صحت سے متعلق کسی خبر کی تصدیق نہیں کرسکتیں، کیونکہ اس بارے میں انہیں حکومت پاکستان،، وزارت خارجہ اور امریکی جیل حکام نے کچھ نہیں بتایا۔