بھارت نے خلائی پروگرام کیلئی1.5ارب ڈالر کی منظوری دیدی

پروگرام کا مقصد ہیوی سیٹلائٹ لانچ کرنے کیلئے غیر ملکی خلائی پورٹس پر انحصار کم کرنا ہے ہمارے لئے یہ انتہائی خوشی کا لمحہ ہے ،سربراہ بھارتی سپیس ریسرچ آرگنائزیشن کے سیون

جمعرات جون 17:57

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 جون2018ء) بھارتی حکومت نے خلائی پروگرام کے لئے 1.5ارب امریکی ڈالر کی منظوری دیدی ہے ،،بھارت کی طرف سے یہ اقدام ہیوی سیٹلائٹ لانچ کرنے کیلئے غیر ملکی خلائی پورٹس پر انحصار کم کرنا ہے ،پروگرام کیلئے اخراجات کی منظوری بھارتی کابینہ نے دی ہے جس کی صدارت بھارت کے وزیراعظم نریندر مودی کر رہے تھے ۔ سرکاری طور پر جاری ہونے والے اعلان میں کہا گیا ہے کہ کابینہ کے منظور کئے گئے پروگرام کے تحت آئندہ چار سال کے دوران 10جی ایس ایل وی ایم کے تھری لانچز لانچ کئے جائیں گے اور اس طرح بھارت 4ٹن وزنی ہیوی سیٹلائٹس لانچ کرنے کے قابل ہو جائے گا ۔

وزیرمملکت جتندرا سنگھ نے وزیراعظم ہائوس میں ذرائع ابلاغ کو بتایا کہ یہ ایک بہت بڑا قدم ہے جو آئندہ چار سال کے دوران اٹھایا جائے گا اور اس طرح ہم غیر ملکی سپیس پورٹس پر انحصار کم کرنے کے قابل ہو جائیں گے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ یہ غیر معمولی پروگرام ہے جس سے بھارت اپنی خلائی ایجنسی لانچ کرنے کے قابل ہوگا ۔دریں اثناء بھارتی سپیس ریسرچ آرگنائزیشن کے سربراہ کے سیون نے اس کامیابی کے بارے میں کہا کہ ہم سب کیلئے یہ آج انتہائی خوشی کا لمحہ ہے کیونکہ ہم خلائی ایجنسی میں اہم اقدام کر رہے ہیں ۔ اس سال فروری میں بھارت نے جنوبی سپیس پورٹس سے سنگل مشن پر 31سیٹلائٹس لانچ کی تھیں جبکہ اس سے ایک سال قبل 104سیٹلائٹس لانچ کی گئی تھیں ۔