پاکستان اسلامی نظریاتی مملکت ہے ۔ آئین اور اسلامی قوانین پوری قوم کا مشترکہ اثاثہ ہیں لیکن مقتدر طبقہ اس پر عملدرآمد میں بڑی رکاوٹ ہے، لیاقت بلوچ

جمعرات جون 21:43

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 جون2018ء) جماعت اسلامی پاکستان اور متحدہ مجلس عمل کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے این اے 130 کے علاقہ شادمان ، مسلم ٹائون ، وحدت کالونی اور رحمن پورہ میں کارنرمیٹنگز، معززین کے اجلاس اور عوامی افطار پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان اسلامی نظریاتی مملکت ہے ۔ آئین اور اسلامی قوانین پوری قوم کا مشترکہ اثاثہ ہیں لیکن مقتدر طبقہ اس پر عملدرآمد میں بڑی رکاوٹ ہے اسی وجہ سے تہذیب و اخلاق کا نقصان اور نئی نسل کو قیام پاکستان کے مقاصد سے دور کیا جارہاہے ۔

لیاقت بلوچ نے کہاکہ پاکستان خطرات میں گھرا ہواہے ۔ ملک و ملت بحرانوں سے دوچار ہیں ۔ امریکہ افغانستان پر ناجائز قابض اور بھارت و اسرائیل کو پورے خطہ میں دہشت گردی ، عدم استحکام کے لیے استعمال کر رہاہے اس سے بڑا المیہ ہے کہ قومی قیادت انتہائی غیر ذمہ دارانہ کردار اور رویہ کا اظہار کر رہی ہے ۔

(جاری ہے)

لیاقت بلوچ نے کہاکہ وفاقی اور صوبائی حکومتیں پانچ سال پورے کر کے رخصت ہو گئی ہیں عوام کو محرومیاں ، بے یقینی ، مہنگائی ، لوڈشیڈنگ ، بے روزگاری ، زہریلا پانی ، ذلت و رسوائی دے گئی ہے ۔

سود کی لعنت اور قرضوں کا بے تحاشہ بوجھ عوام کے لیے وبال جان ہے ۔ لیاقت بلوچ نے کہاکہ متحدہ مجلس عمل نے اسلامی فلاحی منشور دیاہے ۔ دینی جماعتوں کا اتحاد قومی محاذ پر سیاسی بحرانوں میں مثبت اور پوری قوم کے لیے قومی وحدت و یکجہتی کا باعث بن رہاہے ۔ تمام دینی قوتیں محبان وطن ووٹر نظام مصطفیٰؐ کے قیام کے لیے یک جان اور یکسو ہورہے ہیں ۔ اس موقع پر احمد سلمان بلوچ ، احمد رضا بٹ ، اشتیاق گوجر ، تسنیم معین ، آصف بھٹی ، احسان اللہ تبسم اور دیگر رہنمائوں نے بھی خطاب کیا۔