پاک چین جوائنٹ چیمبر آف کامر س اینڈ انڈسٹری کے زیر اہتمام چینی زبان اور ثقافت کے فروغ بارے خصوصی اقداما ت پاکستان اور چین کے درمیان ابلاغ عامہ کے خلاء کو پُر کرنے میں معاون ہیں ، چینی سفیر

جمعہ جون 16:23

پاک چین جوائنٹ چیمبر آف کامر س اینڈ انڈسٹری کے زیر اہتمام چینی زبان ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 جون2018ء) پاکستان میں چین کے سفیر یائو جِنگ نے کہا ہے کہ پاک چین جوائنٹ چیمبر آف کامر س اینڈ انڈسٹری کے زیر اہتمام چینی زبان اور ثقافت کے فروغ کیلئے اٹھائے گئے خصوصی اقداما ت کی وجہ سے پاکستان اور چین کے درمیان موجود ابلاغ عامہ کے خلاء کو پُر کرنے میں بے حد مدد مل رہی ہے اور اس سے دونوں ممالک کے اقتصادی مستقبل پر خوشگوار اثرات مرتب ہوں گے۔

یہ بات انہوں نے پاک ۔ چین جوائنٹ چیمبر آف کامرس کے صدر ایس ایم نوید اور سیکریٹری جنرل صلاح الدین حنیف کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران کہی۔ اس موقع پر ایس ایم نوید نے چینی سفیر کو پاک ۔ چائنہ چیمبر کی سرگرمیوں سے آگاہ کیا۔ چینی سفیر نے اعتراف کیا کہ پاک چین جوائنٹ چیمبر آف کامرس کی طرف سے پاکستان میں چینی زبان اور ثقافت کے فروغ کی کوششیں بے حد کارگر ثابت ہوئی ہیں اور اس سے چینی اور پاکستانی قوم پہلے سے زیادہ قریب ترہو گئی ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ انہیں یہ جان کر بھی خوشی ہوئی ہے کہ چیمبر کی جانب سے اب چینی اور پاکستان کاروباری برادری کے درمیان ویڈیو کانفرنسنگ کا سلسلہ بھی شروع کر دیا گیا ہے۔ نیز چیمبر کے زیر اہتمام دونوں ملکوں کے درمیان تجارتی وفود کے تبادلو ں کو تیز تر اور موثر بنانے کے حوالے سے بھی گراں قدر خدمات انجام دی جا رہی ہیں۔ یاو جنگ نے پاک ۔ چائنہ چیمبر کی ایگزیکٹو کمیٹی کے وفد کے متوقع دورہ ء چین کا بھی خیرمقدم کیا اور یقین دہانی کرائی کہ اس وفد کی بیجنگ، گواینگ زہائو اور شینگڈو میں بہترین سہولتیں فراہم کی جائیں گی اور چینی صنعتکاروں اور تاجروں کے ساتھ ان کی بزنس میچ میکنگ کو ممکن بنایاجائے گا۔

پاک ۔ چائنہ جوائنٹ چیمبر کے صدر ایس ایم نوید نے اس موقع پر دوطرفہ اقتصادی اور تجارتی تعلقات کو مزید بہتر بنانے کے لئے تجویز دی کہ چیمبر کو ترجیحی بنیاد پر ویزہ فراہم کرنے کی سہولت میسر کی جائے کیونکہ یہ خصوصی چیمبر پاکستان بھر میں چین کے ساتھ کاروبار کو فروغ دینے کے خواہشمند صنعتکارو ں اور تاجروں کو مددگار خدما ت فراہم کررہاہے۔

چینی سفیر نے اس تجویز کو منطور کرنے کی یقین دہانی کرائی۔ایس ایم نوید نے چینی سفیر کو بتا یا کہ ان کا چیمبر اپنے ممبران کو ویزہ کے حصول، سکیورٹی کی فراہمی، ٹیکسوں کی معلومات اور کاروباری تشخیصی رپورٹس کی تیاری میں مدد دینے کے علاوہ تجارتی وفود میں شمولیت کے مواقع بھی فراہم کرتا ہے۔ چیمبر کے صدر نے چینی سفیر کو کیتھے پیسیفک ایئر لائنز کے آپریشن کو پاکستان میںدوبارہ شروع کرنے تجویز بھی دی کیونکہ یہ واحد ائر لائن تھی جو پاکستان سے چین کے 20 مقا مات تک اپنی سروس فراہم کرتی تھی جبکہ دیگر تمام ائیر لائنز کی رسائی صرف 5 یا 6 مقامات تک محدود ہے۔

متعلقہ عنوان :