خواہش ہے ملک میں انتخابات کے ذریعے ملکی معیشت کو مستحکم بنانے والی حکومت قائم ہو،ایس ایم منیر

نگراں حکومت شفاف الیکشن کے انعقاد کو ممکن بنائے، ملکی اکنامی کو ایک بار پھر درست ٹریک پر لایا جائے،سرپرست اعلیٰ یو بی جی

جمعہ جون 16:38

خواہش ہے ملک میں انتخابات کے ذریعے ملکی معیشت کو مستحکم بنانے والی ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 جون2018ء) یونائٹیڈ بزنس گروپ (یوبی جی )کے سرپرست اعلیٰ ایس ایم منیر نے کہا کہ قوی امید ہے کہ نگراں حکومت شفاف الیکشن کے انعقاد کو ممکن بنائے گی اوربزنس کمیونٹی کی خواہش ہے کہ ان انتخابات کے ذریعے ملک میں ایسی حکومت قائم ہوگی جو ملکی معیشت کو مستحکم بنانے پر توجہ دے اور اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت پر یقین رکھے، بہترکارکردگی سے ہی ملک آگے بڑھ سکتا ہے اور اس کیلئے ضروری ہے کہ ملکی اکنامی کو ایک بار پھر درست ٹریک پر لایا جائے اور یہ تب ہی ممکن ہوگا کہ جب نئی آنے والی حکومت اسمبلیوں میں تجارت اور صنعت سے وابستہ افراد کو بھی بھیجے۔

ایس ایم منیر نے یو بی جی کے ترجمان گلزار فیروز اورماحولیات سے وابستہ ماہرین سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ماحولیاتی آلودگی کے خاتمے کیلئے درخت لگائے جائیںاور درختوں کی دیکھ بھال کے لئے بھی جامع حکمت عملی مرتب کی جائے۔

(جاری ہے)

ایس ایم منیر نے کہا کہ پاکستان کو موسمیاتی تبدیلی میں بھی بہت سے زاویوں سے خطرات کا سامنا ہے جس میں ایک سنگین خطرہ پلاسٹک ویسٹ سے ہے جس سے زرعی پیداوار کے علاوہ جنگلی حیات ، آبی حیات اور بناتات بھی خطرات سے دوچار ہیں جب کہ اس کے انسانی صحت پر بھی منفی اثرات پڑتے ہیں ،ترقی پذیر ممالک میں 15فیصد سے زائداموات کا سبب آلود ہ سا ئٹ ہیںجس کا فوری بندوبست کرنا ضروری ہے۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں بجلی کا بحران دوبارہ زورپکڑرہا ہے،،پانی کی قلت نے ملک بھرمیں ایک انجانا خوف پیدا کرکے رکھ دیا ہے،،پاکستان میں ہر سیاسی جماعت جب اپوزیشن میں ہوتو ڈیمز بنانے کے دعوے کرتی ہے لیکن جب اقتدار میں آجائے تو ڈیمز پر کوئی توجہ نہیں دی جاتی جس کے نتیجے میں آج پاکستان میں پانی کا بحران پیدا ہورہا ہے اور یہ خدشات ظاہر کئے جارہے ہیں کہ زرعی زمینیں سوکھ رہی ہیں،دریا خشک ہورہے ہیں اور اگر بارشیں ہوگئیں تو پانی کو ذخیرہ کرنے کے لئے ہمارے پاس ڈیمز نہیں ہیں جبکہ ہم سے کئی گنا کم آبادی والے ممالک سو سو اور دو دو سوڈیمز بنا چکے ہیں کیونکہ ان ممالک کو اس بات علم ہے کہ مستقبل میں جنگیں ہتھیاروں کیلئے نہیں بلکہ پانی کیلئے لڑی جائیں گی اس کے علاوہ دنیا بھر میں آلودگی کے خاتمے کیلئے موثر اقدامات کئے جارہے ہیں لیکن افسوس کہ ماضی میں حکومتوں نے موسمیاتی تبدیلی سے پیدا ہونے والے خطرات سے محفوظ رہنے کے لئے سنجیدہ اقدامات نہیں اٹھائے۔

ایس ایم منیر نے کہا کہ یو بی جی گروپ نے ایف پی سی سی آئی سے بھی آلودگیوں کا خاتمہ کیااور ماحول بہتر بنایا ،وہ افراد جو بزنس کمیونٹی کے اس نمائندہ ادارے کو زنگ آلود کررہے تھے انہیں ووٹوں کی طاقت سے نکال باہر کیااوردسمبر2018کے فیڈریشن انتخابات میں بھی گرہن لگے ہوئے اپوزیشن رہنمائوں کو بزنس کمیونٹی کی طاقت سے پانچویں شکست دیں گے۔