طالبان اور افغان حکومت مابین فائر بندی، نیٹو کا خیر مقدم

جنگجوں کو ہتھیار پھینک کر امن مذاکرات کا سلسلہ شروع کرنا چاہئے،سربراہ نیٹو ژانز اسٹولٹن برگ

جمعہ جون 17:26

واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 جون2018ء) نیٹو نے طالبان اور افغان حکومت مابین فائربندی کا خیر مقدم کیا ہے، جنگجوں کو ہتھیار پھینک کر امن مذاکرات کا سلسلہ شروع کر دینا چاہیے۔بین الاقوامی ذرئعطابق نیٹو نے افغان صدر اشرف غنی کی طرف سے طالبان کے ساتھ یک طرفہ اور غیر مشروط فائر بندی کا خیر مقدم کیا ہے۔

(جاری ہے)

اشرف غنی نے گزشتہ روز ہی اعلان کیا تھا کہ رمضان کے آخری ایام اور عید کے موقع پر کی جانے والی اس عارضی جنگ بندی میں البتہ داعش یا دیگر انتہا پسند عناصر کے خلاف کارروائی جاری رہے گی۔

صدر غنی نے کہا کہ طالبان کے ساتھ 20 جون تک جاری رہنے والی اس یک طرفہ جنگ بندی کے دوران انہیں اپنی پرتشدد کارروائیوں پر نظر ثانی کرنا چاہیے۔ نیٹو کے سربراہ ژانز اسٹولٹن برگ نے کہا ہے کہ جنگجوں کو ہتھیار پھینک کر امن مذاکرات کا سلسلہ شروع کر دینا چاہیے۔