کراچی، راؤ انوار کے گھر کو سب جیل قرار دینے پر جواب طلب

جمعہ جون 18:02

کراچی، راؤ انوار کے گھر کو سب جیل قرار دینے پر جواب طلب
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 جون2018ء) سندھ ہائی کورٹ نے نقیب اللہ قتل کیس میں نامز سابق ایس ایس پی ملیر را انوار کے گھر کو سب جیل قرار دینے پر سیکریٹری داخلہ سے جواب طلب کرلیا۔ سندھ ہائیکورٹ میں راو انوار کے سب جیل قرار دینے کے خلاف درخواست کی سماعت میں عدالت نے بیس جون سیکریٹری داخلہ کو تحریری جواب داخل کرنے کا حکم دے دیا۔

(جاری ہے)

سماعت میں حکومت کی جانب سے سیکریٹری داخلہ عدالت میں پیش ہوئے، چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں یہ بھی بتایا جائے کہ مزید کتنے افراد کو ان کے گھروں میں قید کیا گیا ہے۔

بیرسٹر فیصل صدیقی نے عدالت کو جواب دیتے ہوئے کہا کہ را انوار کو سیکیورٹی حکومت نے نہیں دی بلکہ سابق ایس ایس پی کو ان کی خواہش کے مطابق انہیں گھر پر رکھا گیا۔۔عدالت نے سیکریٹری داخلہ کو 20 جون تحریری جواب داخل کرنے کا حکم دے دیا۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ اگر بیس جون کو جواب نہیں آیا تو عدالت یک طرفہ طور پر دستیاب ریکارڈ کی بنیاد پر فیصلہ سنائے گی۔واضح رہے کہ نقیب اللہ کے والد نے راو انوار کے گھر کو سب جیل جیل قرار دینے کے خلاف درخواست دائر کر رکھی ہے۔