کابینہ میں غیرسیاسی اور معزز افراد کو شامل کیا ہے اور کابینہ متوازن ہے، نگراں وزیر اعلیٰ سندھ

جمعہ جون 21:37

کابینہ میں غیرسیاسی اور معزز افراد کو شامل کیا ہے اور کابینہ متوازن ..
کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 جون2018ء) نگراں وزیراعلی سندھ فضل الرحمان نے کہا کہ انہوں نے اپنی کابینہ میں غیرسیاسی اور معزز افراد کو شامل کیا ہے اور کابینہ متوازن ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا مقصد پرامن ماحول میں آزادنہ اور صاف اور شفاف الیکشن کا انعقاد کراناہے۔ جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو سات رکنی نگران صوبائی کابینہ کی گورنر ہاس میں منعقدہ حلف برداری تقریب کے بعد ان کے ہمراہ مزار قائد پر حاضری کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ صوبہ سندھ کو یہ اعزاز حاصل ہوا ہے کہ دیگر صوبوں کے مقابلے میں سب سے پہلے سندھ میں نگراں وزیراعلی کی تعیناتی ہوئی ہے اور انہوں نے بھی اس روایت کو آگے بڑھاتے ہوئے دیگر صوبوں میں سب سے پہلے نگران کابینہ تشکیل دی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ میری کابینہ متوازن ہے اور غیرسیاسی لوگوں پر مشتمل ہے جن کی معاشرے میں ایک عزت اور مقام ہے اور ہمارا کوئی ایجنڈہ نہیں ہے ماسوائے اس کے کہ ایک اچھے اور صاف ستھرے ماحول میں صاف و شفاف اور آزادانہ الیکشن منعقد کرائیں جس میں تمام سیاسی جماعتیں آزادانہ طور پر حصہ لے سکیں۔

انہوں نے کہا کہ ان کی یہ کوشش ہوگی کہ ان کے نگران دور کے دوران وہ بہترین گڈ گورننس کے قیام کی کوشش کریں گے اور اس کے لئے انہوں نے تمام سرکاری محکموں کو واضح ہدایات دے دی ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں فضل الرحمان نے کہا کہ سندھ میں 40 محکمے ہیں مگر ہم نے صرف 7 وزراء لئے ہیں کیوں کہ ہم نے روزمرہ کی بنیاد پر روٹین کے کام انجام دینا ہے لہذا اس کے لئے چھوٹی کابینہ کافی ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ ہاں ہم اگر ضرورت پڑی تو ایک یا دو مزید وزراء کو لے سکتے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ انہوں نے آبپاشی کے پانی کی مناسب تقسیم کے لئے دو اجلاسوں کی صدارت کی ہے تاکہ آخری سرے کے آبادگاروں کو بہتر پانی فراہم ہو سکے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے شہر میں پانی کی مناسب تقسیم کو یقینی بنانے کا بھی فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دریائے سندھ میں پانی کی قلت ہے لیکن پھر بھی بہتر مینجمنٹ کے ذریعے پانی کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے گا۔

نگران وزیراعلی سندھ فضل الرحمان نے اپنے پہلے غیر رسمی کابینہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا کہ آزادانہ اور صاف اور شفاف انتخابات کا انعقاد ایک بہت بڑی ذمہ داری ہے اور ہم اس میں سرخ رو ہونگے۔ انہوں نے کہا کہ یہ ہمارا تعارفی اجلاس ہے اور وزراء کو قلمدان ملنے کے بعد باضابطہ اجلاس منعقد ہوگا جس میں اہم محکموں کے سیکریٹری کابینہ کو اپنے متعلقہ محکموں کے حوالے سے پریزنٹیشن دیں گے۔

اجلاس میں کابینہ اراکین نے اپنا تعارف کرایا اور نگراں وزیراعلی سندھ نے ان کا صوبائی سیکریٹریوں اور بشمول چیئرمین پی اینڈ ڈی اور پرنسپل سیکریٹری کے ساتھ تعارف کرایا۔ قبل ازیں ایک سات رکنی نگران کابینہ سے گورنر سندھ محمد زبیر نے گورنر ہائوس میں منعقدہ تقریب میں حلف لیا۔ تقریب حلف برداری میں نگراں وزیراعلی سندھ فضل الرحمان،ا ٓئی جی پولیس سندھ اے ڈی خواجہ، چیئرمین پی اینڈ ڈی محمد وسیم، صوبائی سیکریٹریز، سول سائٹی و دیگرنے شرکت کی، جبکہ تقریب کی میزبانی چیف سیکریٹری سندھ رضوان میمن نے کی۔

نگران وزرا جنہوں نے حلف لیا ان میں خیر محمد جونیجو، مشتاق علی شاہ، جمیل یوسف، ڈاکٹر جنید شاہ، کرنل (ر) دوست محمد چانڈیو، ڈاکٹر سعدیہ رضوی اور سائمن جون ڈینیل شامل ہیں۔ حلف برداری کی تقریب کے بعد نگراں کابینہ نے نگراں وزیراعلی سندھ فضل الرحمان کی قیادت میں بابائے قوم قائد اعظم محمد علی جناح کے مزار پر حاضری دی اور پھولوں کی چادر چڑھائی۔ نگران وزیراعلی سندھ سمیت نگراں اراکین نے مہمانوں کی کتاب میں تاثرات بھی قلمبند کئے۔