احتساب عدالت نے العزیزیہ ریفرنس کی سماعت پیر جبکہ ایوان فیڈ ریفرنس کی سماعت منگل تک ملتوی کر دی

جمعہ جون 23:25

احتساب عدالت نے العزیزیہ ریفرنس کی سماعت پیر جبکہ ایوان فیڈ ریفرنس ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 جون2018ء) احتساب عدالت نے سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف،، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور کیپٹن (ر)محمد صفدر کے خلاف دائر العزیزیہ ریفرنس کی سماعت پیر تک جبکہ ایوان فیڈ ریفرنس کی سماعت منگل تک ملتوی کر دی ہے ۔ جمعہ کو احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے نیب کی جانب سے دائر ریفرنس کی سماعت کی اس موقع پرسابق وزیراعظم محمد نواز شریف عدالت میں پیش ہوئے۔

سماعت کے موقع پر ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل نیب سردار مظفر عباسی نے حتمی دلائل کے دوران کہا کہ ریکارڈ پر نہیں کہ اختر ریاض راجہ یا واجد ضیاء کی نوازشریف سے دشمنی ہو اور ان دونوں کا رشتہ دار ہونا مسئلہ نہیں ہے۔ ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل نیب نے کہا کہ محمد نواز شریف کے لندن فلیٹس کے اصل مالک ہونے کے براہ راست شواہد پیش کردیئے جب کہ قطری والا دفاع بھی ان کا اپنا ہے جسے ہم غلط ثابت کر چکے ہیں، یہ پراپرٹی ان کی ہے ہم نے شواہد سے ثابت کیا۔

(جاری ہے)

سردار مظفر عباسی کا کہنا تھا کہ ثابت کرچکے کہ پراپرٹی 1993 سے ان کی ہے، یہ لندن فلیٹ کی ملکیت سے انکاری بھی نہیں، فرد جرم کے مطابق ہم نے اپنی ذمہ داری پوری کی ہے، بار ثبوت ان پر تھا کہ وہ وضاحت کرتے مگر وہ کوئی ثبوت نہ دے سکے۔سردار مظفر عباسی نے کہا کہ ہمارا کیس بھی یہی ہے کہ نواز شریف نے اپنے بچوں کے نام جائیداد بنائی، پبلک آفس ہولڈر کرپشن کے پیسے سے جائیداد بناتا ہے تو اپنے نام پر نہیں رکھتا۔ڈپٹی پراسیکیوٹر نیب نے کہا کہ رپورٹ کے مطابق کیلبری فونٹ 2007 سے پہلے کمرشل استعمال کے لیے دستیاب نہیں تھا اور ریڈلے رپورٹ کے مطابق دستاویزات میں جعلسازی پائی گئی ہے۔۔عدالت نے العزیزیہ اسٹیل مل ریفرنس کی سماعت پیر تک جبکہ ایوان فیلڈ کی سماعت منگل تک ملتوی کر دی ہے۔