زمین پر گرے ہوئے ترشاوہ پھل مکھیوں کی افزائش نسل کا موجب بننے لگے

ہفتہ جون 14:57

فیصل آباد۔9 جون(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 جون2018ء) زمین پر گرے ہوئے ترشاوہ پھل مکھیوں کی افزائش نسل کا موجب بننے لگے ہیں لہٰذا باغبانوںکو پھل کی مکھی کے حملہ سے بچائو اور سنڈیوں کی تلفی کیلئے باغات میں گرے ہوئے پھلوںکو فوری اکٹھا کرکے کسی دوسری جگہ زمین میں دبانے کی ہدایت کی گئی ہے تاکہ صحت مند پھلوں کو مکھیوں کے حملہ اور نقصان سے بچایاجاسکے۔

ماہرین زراعت نے بتایاکہ ترشاوہ پھلوں کے متاثرہ درختوں کے نیچے فوری ہلکی گوڈی کرنے سے مکھی کا پیوپا سورج کی روشنی میں تلف ہو جاتاہے تاہم نر مکھی کے تدارک کیلئے میتھائل بوجینال کے 5جنسی پھندے فی ایکڑ بھی لگائے جاسکتے ہیں۔ انہوںنے بتایاکہ مادہ مکھی کا تدارک پروٹین ہائیڈرولائزیٹ کے استعمال سے بھی کیاجاسکتاہے۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ باغبان پٹ سن کی پرانی بوریوں کے ٹکڑوں کو شیرے میں بھگو کر ان کے اوپر ٹرائی کلوروفان کا دھوڑا کریں اور باغ میں سایہ دار جگہوں پر پھیلا دیں کیونکہ اس عمل سے پھل کی مکھی کے تدارک میں مددملنے سمیت پھل کی کوالٹی بہترہوگی ۔

انہوںنے بتایاکہ ترشاوہ پھلوںپر پھل کی مکھی کے حملہ کے باعث بیرونی ممالک میں ان کی برآمدات متاثر ہورہی ہیں۔انہوںنے کہاکہ پھل کی مکھی امرود اور آم کے پھلوں کے بعد ترشاوہ پھلوں پر بھی حملہ آور ہورہی ہے جبکہ پھل کی مکھی کی جسامت گھریلو مکھی سے ذرا بڑی ہوتی ہے مگر مکھی کا رنگ سرخی مائل بھورا اور جسم پر زرد رنگ کی دولکیریں لمبائی کے رخ یا ترشے رخ ہوتی ہیں۔

انہوںنے بتایاکہ اس کے بچے سنڈی کی شکل کے ہوتے ہیں جنہیں میگیٹ کہتے ہیںاوریہ سنڈیاں پھل کے اندر گودا کھا کر پرورش پاتی ہیں اور ساتھ ساتھ اپنا فضلہ پھل کے گودے میں شامل کرتی رہتی ہیں جس سے پھل گندے اورگل سڑ جاتے ہیں۔انہوںنے کہاکہ پھل میں سنڈیاں موجود ہونے کی وجہ سے مارکیٹ میں کم قیمت لگتی ہے اور اس کو سٹور کرنا مشکل ہوجاتا ہے۔ انہوں نے بتایاکہ پھل کی مکھی جب چھوٹے پھل پر ڈنگ مارتی ہے تو اس کے بعد وہاں پھل کے چھلکے کی رنگت دائرہ نما شکل میں زرد ہونا شروع ہوجاتی ہے اور پھل اندر سے گلنا سڑنا شروع ہوجاتاہے جو بعد میں پودے سے گر جاتا ہے۔

انہوںنے کہاکہ ایسے گرے ہوئے پھلوں میں پھل کی مکھیوں کی سنڈیاں پرورش پاتی اور مکمل مکھیاں بن جاتی ہیںجبکہ یہ مکھیاں پودوں پر موجود صحت مند پھلوں کو نقصان پہنچانے کا باعث بھی بنتی ہیں۔انہوںنے کہاکہ باغبان مزید رہنمائی کیلئے محکمہ زراعت کے فیلڈ سٹاف کی خدمات سے بھی استفادہ کرسکتے ہیں۔

متعلقہ عنوان :