یمن ، گزشتہ چند گھنٹوں کی جنگ میں حوثی ملیشیا کا بھاری جانی و مالی نقصان، عرب اتحاد کا دعویٰ

24گھنٹوں میں 44حوثی باغی جہنم واصل، 46 ہتھیار اور حربی آلات بھی تباہ،پیش قدمی کا سلسلہ جاری

ہفتہ جون 15:23

ْصؑدہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 جون2018ء) عرب اتحاد نے دعویٰ کیا ہے کہ یمن میں گزشتہ چند گھنٹوں کی لڑائی میں حوثی ملیشیا کو بھاری جانی نقصان اٹھانا پڑا،24گھنٹوں میں 44حوثی باغی جہنم واصل ہو گئے،حوثیوں کے 46 ہتھیار اور حربی آلات بھی تباہ کر دیے گئے۔غیر ملکی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد کی قیادت نے اعلان کیا ہے کہ گزشتہ چند گھنٹوں کے دوران صعدہ کے محاذ پر حوثی ملیشیا کو بھاری جانی و مالی نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

عرب اتحاد کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران صعدہ کے محاذ پر مارے جانے والے حوثی باغیوں کی تعداد 44 تک پہنچ گئی۔ اس کے علاوہ حوثیوں کے 46 ہتھیار اور حربی آلات بھی تباہ کر دیے گئے۔گزشتہ چند روز کے دوران یمنی فوج نے اتحادی فورسز کی معاونت سے دو صوبوں الجوف اور صعدہ میں پیش قدمی کو یقینی بنایا ہے۔

(جاری ہے)

اس دوران حوثی ملیشیا کے پہلے گڑھ صعدہ میں باغیوں کے ڈھیر ہونے کا سلسلہ جاری ہے۔

ادھر تعز میں یمنی فوج نے شہر کے مغرب میں نئی پیش قدمی کی ہے۔ اس دوران الصفرا، الجبیری، المشب اور دیگر علاقوں پر کنٹرول حاصل کر لیا گیا۔اسی طرح یمنی فوج نے تزویراتی نوعیت کے پہاڑی علاقے جبلِ ابو النار پر نئے ٹھکانے اپنے کنٹرول میں لے لیے۔ اس دوران حوثی ملیشیا کی بڑی پسپائی کے نتیجے میں یمنی فوج حرض شہر کے قریب آ گئی۔

متعلقہ عنوان :