یمن، ایرانی ایجنڈا بے نقاب،

نوجوان قبائلی نسل باغیوں کے جھانسے میں آکر جنگ کی نذر چند روز میں 250قبائلی جان گنوا بیٹھے،ایران نواز حوثی باغی آقائوں کی خوشنودی کے لئے پوری نسل کو تباہ کرنے کے درپے

ہفتہ جون 15:23

صنعائ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 جون2018ء) یمن کی نوجوان قبائیلی نسل حوثی باغیوں کے جھانسے میں آکر جنگ کا ایندھن بن گئی، چند روز میں 250قبائلی نوجوان اپنی جان گنوا بیٹھے،،ایران نواز حوثی باغی محض آقائوں کی خوشنودی کے لئے پوری نسل کو تباہ و برباد کرنے کے درپے ہیں۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق یمن کے مقامی ذریعے کا کہنا ہے کہ صنعا کے قریب ایک چھوٹے سے علاقے سے تعلق رکھنے والے مختلف قبائلی نوجوانوں کی بڑی تعداد ایران نواز حوثی باغیوں کے جھانسے میں آکر جنگ کا ایندھن بن گئی۔

صنعا کے نواحی علاقے ھمدان میں بیت انھم سے تعلق رکھنے والے 250 قبائلی نوجوان حوثیوں کی ترغیب پر لڑائی میں شامل ہوئے اور محض چند روز کے دوران ملک کے مغربی ساحلی محاذ پر لڑتے ہوئے مارے گئے۔

(جاری ہے)

ذرائع کا کہنا ہے کہ حوثیوں کی جانب سے جنگ کا ایندھن بننے والے ان قبائلی نوجوانوں میں بعض کم عمر بچے بھی شامل ہیں لالچ یا دھونس کے ذریعے جنگ میں جھونکا گیا۔

یمن کے قبائلی ذرائع کے مطابق افرادی قوت کی شدید قلت کا سامنا کرنے والے حوثی شدت پسند اپنے مذموم جنگی مقاصد کے حصول کے لیے قبائل کے کم عمر بچوں کو بھی ڈرا دھمکا کر یا انہیں پیسے کا لالچ دے کر میدان جنگ میں بھیج رہے ہیں۔ حوثی باغیوں نے ملک کے نہتے شہریوں کو جنگ میں جھونکنے کا سلسلہ غیر معقول حد تک پھیلا دیا ہے اور وہ اپنے مخصوص ایرانی ایجنڈے کے مطابق ملک کو تباہ کررہے ہیں۔

متعلقہ عنوان :