تہران میں ’یوم القدس‘ ملین مارچ کا اہتمام ،

لاکھوں افراد کی شرکت اسرائیلی ریاستی دہشت گردی کی مذمت، فلسطینیوں کا قتل عام بند کرانے، مشاعر مقدسہ کی بے حرمتی کا سلسلہ روکنے، فلسطینی تحریک انتفاضہ کو سپورٹ کرنے ،دنیا میں دفاع فلسطین ریلیاں نکالنے کا مطالبہ

ہفتہ جون 15:54

تہران (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 جون2018ء) ایران کے دارالحکومت تہران میں ’یوم القدس‘ کی مناسبت سے عظیم الشان ملین مارچ کا اہتمام کیا گیا جس میں عوام وخواص سمیت لاکھوں افراد نے شرکت کی۔اطلاعات کے مطابق تہران میں نکالی جانیوالی ’یوم القدس ملین مارچ‘ ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے فلسطین میں اسرائیلی ریاستی دہشت گردی کی مذمت، فلسطینیوں کا قتل عام بند کرانے، مشاعر مقدسہ کی بے حرمتی کا سلسلہ روکنے، فلسطینی تحریک انتفاضہ کو سپورٹ کرنے اور پوری دنیا میں دفاع فلسطین ریلیاں نکالنے کا مطالبہ کیا گیا۔

(جاری ہے)

تہران کے علاوہ ایران کے کم سے کم 900 شہروں میں ’یوم القدس‘ ریلیاں نکالی گئیں۔ سب سے بڑا مظاہرہ تہران میں ہوا جس میں لاکھوں فراد نے شرکت کی۔ مقررین میں سابق صدر محمود احمدی نژاد اور کئی دیگر اعلیٰ شخصیات شامل تھیں۔اس موقع پر مظاہرین نے ہاتھوں میں بینز اور کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر فارسی میں ’اسرائیل اور امریکہ مردہ باد‘ کے نعرے درج تھے۔ مظاہرین نے صہیونی ریاست کے فلسطینی قوم پر ڈھائے جانیوالے لا متناعی سلسلے کو ختم کرنے پر زور دیا۔ ریلی کے آخر میں شرکاء نے اسرائیلی اور امریکی پرچم نذرآتش کئے اور مسلمان ممالک پر زور دیا کہ وہ القدس کی آزادی کیلئے اسلامی لشکر تشکیل دیں۔