چیف جسٹس پاکستان نے شارع فیصل سمیت تمام شاہرائوں سے اشتہاری دیواروں کو گرانے کا حکم جاری کردیا

ایف ٹی سی کے سامنے دیوار بنا کر شہر کی خوبصورتی کو ختم کردیا گیا ہے اور جگہ جگہ ایسی دیواریں بنائی جارہی ہیں،چیف جسٹس ثاقب نثار

ہفتہ جون 16:25

چیف جسٹس پاکستان نے شارع فیصل سمیت تمام شاہرائوں سے اشتہاری دیواروں ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 جون2018ء) چیف جسٹس پاکستان نے شارع فیصل سمیت تمام شاہراہوں سے اشتہاری دیواروں کو گرانے کا حکم جاری کردیا۔ہفتہ کو سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں شہر میں اشتہاری دیواریں بنانے سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی۔درخواست گزار نے موقف اپنایا کہ شہر بھر خصوصا کنٹونمنٹ بورڈز میں دیواریں کھڑی کی جا رہی ہیں، ایف ٹی سی کے سامنے دیوار بنا کر شہر کی خوبصورتی کو ختم کردیا گیا ہے اور جگہ جگہ ایسی دیواریں بنائی جارہی ہیں۔

(جاری ہے)

چیف جسٹس نے دوران سماعت کراچی کنٹونمنٹ بورڈ کے سی ای او کو طلب کیا اور استفسار کیاکہ بتائیں کس نے یہ دیواریں بنائیں سی ای او کراچی کنٹونمنٹ نے عدالت کو بتایا کہ بعض دیواریں دفاعی مقاصد کیلیے بنائی گئی ہیں البتہ کنٹونمنٹس نے اشتہاری کمپنیوں کونوٹس جاری کردیا ہے۔جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ نوٹس سے کچھ نہیں ہوگا کارروائی کریں۔اس موقع پر عدالت نے شارع فیصل سمیت تمام شاہراہوں سے اشتہاری دیواروں کو گرانے کا حکم دے دیا اور اس حوالے سے 10 روز میں رپورٹ بھی طلب کرلی اور آئندہ اشتہاری مقاصد کے لیے دیواریں قائم کرنے پر بھی پابندی عائد کردی۔