کشمیری بھارت سے آزادی تک اپنی جدوجہد ہر قیمت پر جاری رکھیں گے،سید علی گیلانی

بھارت کو کشمیر میں ہر محاذ پر ناکامی کا سامنا ہے،کشمیری تحریک آزادی کیخلاف بھارت اور کٹھ پتلیوں کی سازشوں اور ریشہ دوانیوں سے باخبر رہیں ، بیان

ہفتہ جون 17:36

سرینگر (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 جون2018ء) مقبوضہ کشمیر میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی نے کہا ہے کہ کشمیری بھارت سے آزادی تک اپنی جدوجہد ہر قیمت پرجاری رکھیں گے۔انہوںنے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں تعینات اپنے آٹھ لاکھ سے زائد فورسز اہلکاروں کے بل بوتے پر کشمیریوں کو مرعوب کرنے کی کوشش کر رہا ہے لیکن اسے ہر محاذ پر ناکامی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔

کشمیر میڈیاسروس کے مطابق سید علی گیلانی نے سرینگرمیں جاری ایک بیان میں کٹھ پتلی انتظامیہ کی طر ف سے خود کو ایک مرتبہ پھر جمعہ کی نماز پڑھنے سے روکنے کو ایک فسطائی عمل قرار دیتے ہوئے اسکی شدید مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ کٹھ پتلی حکومت نے نہتے کشمیریوں کے خلاف خوف و دہشت کی لہر پھیلا رکھی ہے ۔

(جاری ہے)

سید علی گیلانی نے کہا کہ کشمیریوں کے اظہار رائے کی آزادی کو طاقت کے بل پر دبایا جا رہا ہے، انہیں مذہبی فرائض کی بجا آوری اور پرامن احتجاج سے روکا جا رہا ہے۔

حریت چیئرمین نے کہا کہ کشمیریوں کی قربانیاں ہر گز رائیگاں نہیں جائیں گی اور کسی کو بھی بیش بہا قربانیوں کے ساتھ کھلواڑ کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ سید علی گیلانی نے کہا کہ کشمیری اپنی مبنی برحق جد وجہد کو اس کے منطقی انجام تک ہر قیمت پر جاری رکھیں گے۔ انہوںنے کشمیریوں پر زور دیا کہ وہ تحریک آزادی کے خلاف بھارت اور اسکی کٹھ پتلیوں کی سازشوں اور ریشہ دوانیوں سے باخبر رہیں اور نام نہاد انتخابات اور تما م سرکاری تقریبات سے خود کو دور رکھیں۔

انہوں نے اسرائیلی فورسز کے ہاتھوں نہتے فلسطینیوں کی نسل کشی پر سخت تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ فلسطینی عوام کو اپنی ہی سرزمین سے بے دخل کرنا اقوامِ متحدہ کے ضابطوں کے منافی ہے۔ یاد رہے کہ کٹھ پتلی انتظامیہ نے سید علی گیلانی کو 2010سے سرینگر میں گھر میں نظر بند کر کھا ہے ۔ انہیں رمضان المبارک کے مہینے میں بھی نماز جمعہ کی ادائیگی سے روکا جا رہا ہے۔ گزشتہ روز جب انہوں نے جمعہ کی نمازکیلئے مسجد جانا چاہا تو گھرکے مرکزی دروازے پر تعینات بھارت پولیس اہلکاروں نے باہر سے دروازہ سیل کر کے انہیںباہر آنے سے روک دیا۔