بھارتی ہٹ دھرمی کے باعث جنوبی ایشیا کا امن و استحکام دائو پر لگا ہوا ہے ،ڈیموکریٹک فریڈم پارٹی

کشمیری نظر بندوںکو انتقامی کارروائیوں کا نشانہ بنایا جا رہا ہے،لبریشن فرنٹ آر

ہفتہ جون 17:36

سرینگر (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 جون2018ء) مقبوضہ کشمیر میںجموں کشمیر ڈیمو کریٹک فریڈم پارٹی نے کہا ہے کہ کشمیری اپنے پیدائشی حق ، حق خود ارادیت کیلئے جد و جہد کر رہے ہیں جس کا وعدہ اُن سے بین الاقوامی برادری نے کر رکھا ہے۔ تنظیم نے کہا کہ بھارت جو اپنے آپ کو دنیا کا سب سے بڑا جمہوری ملک گردانتا ہے ، کشمیریو ںکو حق خود ارادیت دینے کے بجائے طاقت کے بل پر انکی جدوجہد کو دبانے کو کوشش کر رہاہے۔

کشمیر میڈیاسروس کے مطابق ڈیموکریٹک فریڈم پارٹی کے ترجمان نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہا کہ بھارت کی ہٹ دھرمی کی وجہ سے نہ صرف کشمیری عوام سخت مشکلات کا شکار ہیں بلکہ پورے جنوبی ایشیا کا امن و استحکام دائو پر لگا ہوا ہے۔ انہوںنے کہا کہ نئی دلی اور مقبوضہ کشمیر میں اسکی کٹھ پتلیوں کو یہ بات ذہن نشین کرلینی چاہئے کہ جموں کشمیر کے عوام نے اپنا سیاسی حق حاصل کرنے کیلئے بے پناہ قربانیاں دے رہے ہیں اور وہ مقصد کے حصول تک اپنی جدوجہد جار ی رکھیںگے۔

(جاری ہے)

ترجما ن نے مقبوضہ خطے کے اطراف و اکناف میں حقوق انسانی کی سنگین پامالیوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ قتل و غارتگری،ظلم و جبر، قید و بند اس اسی طرح کی دوسری کارروائیاں حالات کو اور بگاڑ رہی ہیں۔انہوں نے اقوام متحدہ کے علاوہ ایمنسٹی انٹرنیشنل،ہیومن رائٹس واچ، انٹر نیشنل ریڈ کراس اور انسانی حقوق کی دیگر عالمی تنظیموں پر زور دیا کہ وہ نہتے کشمیریوں پر بھارتی مظالم کا نوٹس لیں۔

دریں اثنا جموںوکشمیر لبریشن فرنٹ آر کے سرپرست اعلیٰ بیرسٹر عبدالمجید ترمبو اور ایڈوکیٹ ایوب راٹھور نے ایک مشترکہ بیان میں جیلوں میں غیر قانونی طور پر نظر بند حریت رہنمائوں ، کارکنوں اور عام کشمیریوں کی حالت زار پر سخت تشویش کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں نظر بندوں کو طبی سمیت تمام بنیادی سہولیات سے محروم اور جرائم پیشہ قیدیوں کے ساتھ رکھ کر انتقام کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

انہوں نے نئی دلی کی بدنام زمانہ تہاڑ جیل میں نظر بند کشمیری تاجر ظہور احمد وٹالی کی درخواست ضمانت عدالت کی طرف سے مسترد کیے جانے کی شدید مذمت کی۔ دونوں رہنمائوں نے کہا کہ بھارت اگر واقعی مذاکرات میں مخلص ہے تو اسے اعتماد سازی کے عمل کے طور پر عید الفطر سے پہلے جیلوں میں بند کشمیریوں کو رہاکرنا چاہیے۔