امریکہ طالبان سے بات چیت کو تیار، پاکستان مدد کرے

افغان مسئلے کا حل افغانوں کی مرضی کیمطابق ہونا چاہیے، واشنگٹن امن برقرار رکھنے لئے کثیر الجہت محاذ پر کام کررہا ہے

ہفتہ جون 17:40

واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 جون2018ء) امریکہ افغان طالبان سے مذاکرات کے لئے تیار ہے پاکستان امن عمل میں مدد کرے، افغان مسئلے کا حل افغانوں کی مرضی اور قیادت کے تحت ہونا چاہیے، واشنگٹن افغانستان میں امن برقرار رکھنے لئے کثیر الجہت محاذ پر کام کررہا ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق امریکی حکام نے اس بات کی تصدیق کر دی ہے کہ امر یکہ افغان طالبان سے پھر مذاکرات کرے گا۔

افغان مسئلے کا حل افغانوں کی مرضی اور افغان قیادت کے تحت ہونا چاہیے ۔ امن عمل کے لئے پاکستان کا تعاون ناگزیر ہے۔ سیمینار میں امریکی حکام نے تصدیق کی کہ واشنگٹن افغانستان میں امن برقرار رکھنے لئے کثیر الجہت محاذ پر کام کررہا ہے ۔ اس مقصد کے لئے پاکستان مرکزی کردار دا کر سکتا ہے۔امریکی صدر کی سینئر مشیر لیزاسیرٹیس نے کہا کہ پاکستان سے افغانستان میں امن کی بحالی کیلئے مدد کی درخواست کی ہے۔

(جاری ہے)

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے گزشتہ روز کہا تھا کہ پاکستان کو درپیش سیکیورٹی خدشات سمجھ چکے ہیں اور یقین دلاتے ہیں کہ افغانستان میں امن کی بحالی میں ان کے مفاد کا خیال رکھیں گے ۔ واضح رہے کہ مائیک پومپیونے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ جبکہ مائیک پینس نے نگراں وزیراعظم ناصر الملک سے فون پر بات چیت کی۔ ان رابطوں کو دونوں ممالک کے مابین تعلقات میں نرمی کے طور پر دیکھا جارہا ہے ۔