مری بائیکاٹ کی آڑ لے کر پولیس چوکیوں کے انچارج صاحبان سمیت چوکیوں پر تعینات کانسٹیبلوں نے بھی غیر اخلاقی رویہ اختیار کر لیا

ہفتہ جون 20:19

مری (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 جون2018ء) مری بائیکاٹ کی آڑ لے کر پولیس چوکیوں کے انچارج صاحبان سمیت چوکیوں پر تعنیات کانسٹیبلوں نے بھی غیر اخلاقی رویہ اختیار کر لیا ہے جس کی متعدد مثالیں دی جاسکتی پولیس کے اس غیر اخلاقی رویے سے پولیس چوکیوں پر پرانے پولیس ملازمین بھی نالاں ہیں کیو نکہ پولیس چوکیوں کے انچارجزکی ایماء پر پولیس چوکیوں میں انچارج کے کارخاصوں کے ہاتھوں پرانے ملازمین تنگ ہیں کیونکہ چوکیوں کے کار خاص پرانے ملازمین کو اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کر کے مختلف قسم کی غیر ضرور ڈیوٹیاں لے رہے ہیں جبکہ مقامی افراد سمیت میڈیا سے وابستہ رپورٹر سے بھی کسی ضروری واقعہ رپورٹنگ کے لیے جانے والوں سے چوکی انچارج غیر اخلاقی رویہ کے ساتھ پیش آتے ہیں جبکہ جہاں سے مال پانی آنے والوں کو فل پروٹوکول دیا جاتا ہے جس کی وجہ سے مری کی مقامی آبادی سے سمیت شعبہ صحافت سے وابستہ افراد میں تشویش پائی جاتی اگر پولیس نے اپنا رویہ درست نہ کیا تو کسی بھی وقت کو ئی ناخوشگوار واقعہ پیش آسکتا اور مری کا امن وامان خراب ہوسکتا ہے مری کے سیاسی سماجی حلقوں نے اے ایس پی مری کامران حمیدایس ایس پی راولپنڈی سے نوٹس لینے کی اپیل کی ہے

متعلقہ عنوان :