چیف جسٹس کااحتساب عدالت کونوازشریف اور مریم نوازکے ریفرنس کا ایک ماہ میں فیصلہ سنانے کا حکم

چیف جسٹس نے نواز شریف اور مریم نواز کو کلثوم نواز کی عیادت کے لیے جانے کی اجازت دے دی

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان اتوار جون 11:15

چیف جسٹس کااحتساب عدالت کونوازشریف اور مریم نوازکے ریفرنس کا ایک ماہ ..
لاہور (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔10 جون 2018ء) چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے احتساب عدالت کو سابق وزیراعظم نوازشریف اور مریم نوازکے ریفرنس کاایک ماہ میں فیصلہ سنانےکاحکم دے دیا۔ تفصیلات کے مطابق نواز شریف اورمریم نواز کےخلاف ٹرائل مکمل کرنےکی درخواست پرسماعت ہوئی۔۔چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں احتساب عدالت کی جانب سے شریف کیخلاف ٹرائل مکمل کرنے کی مدت سماعت میں توسیع کی درخواست پر سماعت کی۔

اس موقع پر نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث اور نیب کے ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل پیش ہوئے۔ دوران سماعت چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا کہ احتساب عدالت نواز شریف،،،مریم نواز کے خلاف تینوں ریفرنس کا ایک ماہ میں فیصلہ سنائے۔

(جاری ہے)

نواز شریف کےوکیل خواجہ حارث کی 6 ہفتوں میں ٹرائل مکمل کرنےکی استدعامسترد کر دی گئی۔۔چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ملزمان بھی پریشان ہیں اور قوم بھی ذہنی اذیت کا شکار ہے ۔

اب ان کیسز کافیصلہ ہوناچاہے۔دوران سماعت چیف جسٹس نے کہا کہ نوازشریف،،،مریم نواز،،بیگم کلثوم کی عیادت کیلیےجاناچاہتےہیں توجاسکتےہیں۔مجھے بتائیں نواز شریف عیادت کےبعد کب واپس آئیں گے ؟۔دوران سماعت چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ آپ تشہیر کیلیے کہتے ہیں ہمیں کلثوم نواز کی عیادت کیلیے اجازت نہیں دی گئی؟۔آپ زبانی درخواست کریں ہم اجازت دیں گے۔

چیف جسٹس نے حکم دیا کہ اب  احتساب عدالت ہفتہ کوبھی تینوں ریفرنس کی سماعت کریگی۔ ۔۔چیف جسٹس نے کہا کہ  احتساب عدالت اب ہفتے کے روز بھی تینوں ریفرنسز کی سماعت کرے گی جس پر نواز شریف کے وکیل نے کہا کہ وہ ہفتہ اور اتوار کو عدالت میں پیش نہیں ہوسکتے۔ جسس پر چیف جسٹس نے کہا کہ خواجہ صاحب آپ ابھی جوان ہیں۔ میں بوڑھا ہو کر اتوار کو بھی سماعتیں کرتا ہوں۔