سپریم کورٹ نے تنخواہیں نہ دینے والے میڈیا ہائوسز کے سی اوز اور مالکان کو (آج)طلب کر لیا

ْمیڈیا ہائوسز مالکان ورکرز کو پیسے نہیں دے سکتے تو بینکوں سے قرض دلوا دیتے ہیں ،عید سے پہلے ان کے واجبات ادا ہونے چاہئیں ‘معاملہ حل نہ ہوا توچاندرات اور عیدکو بھی عدالت لگے گی‘چیف جسٹس پاکستان کے دوران سماعت ریمارکس

اتوار جون 12:30

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 جون2018ء) سپریم کورٹ نے تنخواہیں نہ دینے والے میڈیا ہائوسز کے سی اوز اور مالکان کو (آج)طلب کر لیا،،چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دئیے ہیں کہ کہا کہ میڈیا ہائوسز مالکان ورکرز کو پیسے نہیں دے سکتے تو بینکوں سے قرض دلوا دیتے ہیں ،،عید سے پہلے ان کے واجبات ادا ہونے چاہئیں ‘معاملہ حل نہ ہوا توچاندرات اور عیدکو بھی عدالت لگے گی۔

(جاری ہے)

اتوار کو سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں میڈیا ورکرز کو تنخواہوں کی عدم ادائیگی کے معاملے پر سماعت ہوئی چیف جسٹس نے کہا کہ میڈیا ہائوسز مالکان پیسے نہیں دے سکتے تو رہن رکھوا کر بینکوںسے قرض دلوا دیتے ہیں‘ عید سے پہلے ان کے واجبات ادا ہونے چاہئیں‘ اگر معاملہ حل نہ ہوا تو چاند رات اور عید کو بھی عدالت لگے گی۔ اتوار کو سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں میڈیا ورکرز کو تنخواہوں کی عدم ادائیگی کے معاملے پر سماعت ہوئی۔

سپریم کورٹ نے تنخواہ نہ دینے والے میڈیا ہائوسز کے سی اوز اور مالکان کو (آج) پیر کو طلب کرلیا۔ چیف جسٹس نے کہا کہ یہ پیسے نہیں دے سکتے تو رہن رکھوا کر بینکوں سے قرض دلوا دیتے ہیں۔ عید سے پہلے ان کے واجبات ادا ہونے ہیں اگر معاملہ حل نہ ہوا تو چاند رات اور عید کو بھی عدالت لگے گی۔