افغان طالبان کی طرف سے عید الفطر کے دنوں میں جنگ بندی کے اعلان پر شہباز شریف کا رد عمل سامنے آ گیا

افغان فورسز کی جانب سے عید کے دنوں میں جنگ بندی کے اعلان کا خیر مقدم کرتے ہیں،صدر ن لیگ شہباز شریف کا ٹویٹ

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان اتوار جون 17:17

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 جون2018ء) افغان طالبان کے سربراہ مولوی ہبت اللہ نے عید کے تین روز میں افغان فورسز کے ساتھ جنگ بندی کااعلان کیا تھا۔۔طالبان کی جانب سے ہفتہ کو جاری کئے گئے بیان میں کہا گیا تھا کہ طالبان کی قیادت نے عید کی نماز ،ْ دیگر مذہبی رسومات اور عید پر امن طریقے سے گزار نے کیلئے اپنے جنگجوئوں کو افغان فورسز کے خلاف حملے نہ کر نے کا حکم دیا ہے تاہم اگر طالبان پر حملہ ہوتا ہے تو وہ اپنا دفاع کرینگے ۔

اسی متعلق پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر و سابق وزیر اعلی شباز شریف نے بھی ٹویٹ کیا ہے اور افغان فورسز کی جانب سے عید کے دنوں میں جنگ بندی کے اعلان کا خیر مقدم کیا ہے،،شہباز شریف کا کہنا تھا کہ ہم افغانستان کی طرف عید الفطر کے دوران جنگ بندی کے لیے کیے گئے اقدامات کا خیر مقدم کرتے ہیں ۔

(جاری ہے)

اس پیشکش کے لے پہلے افغانستان کی حکومت اور پھر افغان طالبان کے شکر گزار ہیں۔

یاد رہے طالبان نے عید کے دنوں میں جنگ بندی کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ جنگ بندی کا اطلاق غیر ملکی فوجیوں پر نہیں ہوگا بلکہ ان کے خلاف لڑائی جاری رہے گی۔ یاد رہے کہ اس سے پہلے صدر اشرف غنی نے رمضان کی 27اور عید کے بعد پانچ روز تک جنگ بندی کا اعلان کیا تھا امریکی فوج نے بھی افغان حکومت کے اعلان کے بعد کارروائیاں روکنے کا فیصلہ کیا تھا ۔

طالبان کے بیان میں کہا گیا کہ فوجی کمیشن کے ذمہ داران اور طالبان کے گور نروں کو ہدایت کی ہے کہ ان قیدیوں سے متعلق قیادت کو معلومات فراہم کی جائیں جو آئندہ کیلئے افغان فورسز نے نہ جانے اور طالبان کے خلاف جنگ میں حصہ نہ لینے کی یقین دہانی کرائے تاکہ ان کی رہائی کے بارے میں فیصلہ کیا جاسکے ۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ طالبان کے جیلوں میں جنگی یا دیگر جرائم میں گرفتار کئے گئے قیدیوں کے ساتھ عید کے دنوں میں ان کے خاندانوں کی ملاقاتوں کا انتظام کیا جائیگا۔