سی پیک تاریخی منصوبہ ہے، جاپانی کمپنیاں بھی راہداری میں کام کر سکتی ہیں، جاپانی سفیر

دونوں ممالک کی وینڈر انڈسٹری میں تعاون کے وسیع امکانات موجود ہیں، پاکستان اور جاپان تجارت کو نئی بلندیوں تک پہنچا سکتے ہیں،جاپان کے سفیر تاکاشی کیورائی

اتوار جون 18:10

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 جون2018ء) پاکستان میں جاپان کے سفیر تاکاشی کیورائی نے کہا ہے کہ پاکستان اور جاپان کے مابین تجارتی تعاون بڑھانے کے وسیع امکانات موجود ہیں جس کیلئے دونوں ممالک اور انکے نجی شعبوں کو مل کر کام کرنا ہو گا۔ سی پیک ایک تاریخی اور لازوال منصوبہ ہے جس سے پاکستان کی معیشت مستحکم ہو گی جبکہ چین کو اپنی معاشی سرگرمیاں بڑھانے میں مدد ملے گی۔

سی پیک کے تحت منصوبوں سے متعدد ممالک کی کمپنیاں استفادہ کر رہی ہیں اور جاپانی کمپنیاں بھی اس ضمن میں کام کر سکتی ہیں۔ جاپانی کمپنیاں کراچی میں سرمایہ کاری کا جائزہ لے رہی ہیں۔جاپان کے سفیر تاکاشی کیورائی نے یہ بات ایف پی سی سی آئی کے صدر غضنفر بلورکے اعزاز میں دئیے گئے افطار ڈنر کے موقع پر کہی۔

(جاری ہے)

انھوں نے کہا کہ پاکستان اور جاپان وینڈر انڈسٹری میں تعاون کر سکتے ہیں جس سے پاکستان کے علاوہ جاپان کی آٹو انڈسٹری کو بھی فائدہ ہو گا۔

دونوں ممالک ہائی ٹیک انڈسٹری اور زرعی شعبہ میں بھی تعاون کر سکتے ہیں اور پاکستان جاپان کے تجربات و مہارت سے فائدہ اٹھا سکتا ہے۔انھوں نے کہا کہ وہ پاکستانی مصنوعات اور خدمات جاپان میں متعارف کروانے کی بھرپور کوشش کریں گے اور یہ کہ پاکستانی برامدکنندگان مارکیٹنگ اور معیار کو بہتر بنائیں۔انھوں نے کہا کہ پاکستان جاپانی شہر اوساکا میں ہونے والی بین الاقوامی نمائش میں بھر پور شرکت کرے جہاں جاپان ایف پی سی سی آئی کا پولین بنانے میں مدد کرے گا۔

اس موقع پر ایف پی سی سی آئی کے صدر غضنفر بلور نے کہا کہ دونوں ممالک کے مابین خوشگوار تعلقات ہیں جن میں مزید اضافہ کی ضرورت ہے۔دونوں ممالک ایس ایم ای کے شعبہ میں تعاون بڑھا سکتے ہیںجس سے کاروبار،، روزگار اور محاصل بڑھیں گے۔انھوں نے کہا کہ تجارتی وفود کے زریعے جاپانی سرمایہ کاروں میں پاکستان کے متعلق آگہی بڑھائی جا سکتی ہے۔ جاپان نے مشکل وقت میں ہمیشہ پاکستان کی مدد کی ہے اور عالمی امور میں دونوں ممالک کی رائے میں یکسانیت ہوتی ہے اور جاپان پاکستان کو جنوبی ایشیاء میں اہم حلیف سمجھتا ہے۔

اجلاس میں ایف پی سی سی آئی کے تین نائب صدر عاطف اکرام شیخ، کریم عزیز ملک اور طارق حلیم، سابق صدر زبیر احمد ملک، چئیرمین کو آردینیشن ملک سہیل، عدیل رئوف، یاسر شیخ، احمد عزیز بلور اور آمنہ ملک بھی موجود تھے۔