گذشتہ 13ماہ قبل ٹنڈوالہ یار میں ڈیوٹی دوران روڈ حادثے میں جاں بحق ہونے والے پولیس اہلکار کے گھر میں فاقہ کشی

اتوار جون 18:20

ٹنڈوالہ یار (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 جون2018ء) گذشتہ 13ماہ قبل ٹنڈوالہ یار میں ڈیوٹی دوران روڈ حادثے میں جاں بحق ہونے والے پولیس اہلکار کے گھر میں فاقہ کشی۔ سندھ پولیس کی جانب سے جاں بحق ہونے والے پولیس اہلکار کے ورثاء کی کوئی مدد نہیں کی گئی پولیس اہلکار کی بیوہ و بچے عید کے کپڑے لینے سے بھی محروم ہوگئے۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطابق ضلع ٹنڈوالہ یار کے پولیس اہلکار منظور لغاری گذشتہ 13مہینے قبل ٹنڈوالہ یار کہ چمبڑ روڈ پر واقع کراچی ہوٹل کے مقام پر روڈ حادثے میں شدید زخمی ہونے کے بعد زخموں کی تاب نالاتے ہوئے جاں بحق ہوگیا تھا منظور لغاری کے جاں بحق ہونے کے بعد اس کے گھر میں فاقہ کشی کا سلسلہ شروع ہوگیا مگر سندھ پولیس اور ضلعی پولیس انتظامیہ کی جانب سے حادثے میں جانبحق ہونے والے پولیس اہلکار منظور لغاری کی بیواہ اور بچوں کے لئے کوئی مالی امداد نہیں کی گئی جس پر پولیس اہلکار منظور لغاری کی بیواہ اپنے بچوں کے ہمراہ پریس کلب پہنچ گئی جہاں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ میرا شوہر جو کہ محکمہ پولیس میں تھا جو ڈیوٹی کے دوران حادثے میں جانبحق ہوگیا تھا اور اس کے جانبحق ہونے کے بعد میں اور میرے بچے فاقہ کشی کی زندگی گذار رہے ہیں اور ہمارے گھر میں کوئی کمانے والا بھی نہیں ہے اب نوبت یہ آگئی ہے کہ ہم بھیک مانگنے پر مجبور ہیں اور میں اپنے بچوں کو عید کے کپڑے بھی نہیں دلاسکتی انہوں نے آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ ، ڈی آئی جی حیدرآباد ، ایس ایس ٹنڈوالہ یار ودیگر سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ہماری فوری طور پر مالی امداد کریں تاکہ میں اور میرے بچے بہتر زندگی گذار سکیں ۔