ایران کا ہندوستان کے ساتھ اسٹراٹیجک تعاون جاری رکھنے پر آمادگی کا اظہار

چابہار منصوبہ سے ہندوستان کو افغانستان اور وسطی ایشیائی ریاستوں تک رسائی ملے گی،ایرا نی صدر حسن رو ہا نی چابہار بند ر گا ہ دو نو ں مما لک کے در میان با ہمی تعاون کا اہم سنگ میل ہے، بھا رتی وزیر اعظم نر یندر مو دی

اتوار جون 20:50

چھنگ تا ئو (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 جون2018ء) ایران کے صدر حسن رو ہا نی اور بھا رتی وزیر اعظم نر یندر مو دی نے دو نو ں مما لک کے ما بین ا سٹراٹیجک تعاون جاری رکھنے پر آمادگی کا اظہار کیا ہے ،غیر ملکی میڈ یا کے مطا بق اتوار کو شنگھا ئی تعاون تنظیم کے سر برا ہی اجلاس میں شر کت کے بعد دو نوں رہ نما ئو ں نے ملا قات کی ۔ملا قا ت میں دو نو ں رہ نما ئو ں نے با ہمی تعاون کو فرو غ دینے پر اتفا ق رائے کیا،اس مو قع پر ایرا نی صدر حسن رو ہا نی نے کہا کہ ایران ہندوستان کے ساتھ اسٹراٹیجک تعاون جاری رکھنے کے سلسلے میں مکمل طور پر آمادہ ہے۔

(جاری ہے)

صدر حسن روحانی نے اس ملاقات میں ہندوستان اور ایران کے درمیان باہمی تعلقات کے فروغ پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان اور ایران کے درمیان چابہار منصوبہ ایک اہم منصوبہ ہے جس کے نتیجے میں ہندوستان کو افغانستان اور وسطی ایشیائی ریاستوں تک رسائی آسان ہوجائے گی۔اس ملاقات میں ہندوستان کے وزیر اعظم نریندر مودی نے بھی باہمی تعلقات کے فروغ پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان ایران کے ساتھ تمام شعبوں میں تعلقات کو فروغ دینے کا خواہاں ہے۔ ہندوستانی وزیر اعظم نے چابہار منصوبے کو بھی دونوں ممالک کے درمیان باہمی تعاون کے سلسلے میں سنگ میل قراردیا۔