پی ٹی آئی نے ن لیگ کی بڑی وکٹ اڑا دی

لیگی رہنما سردار اختر اور سردار جاوید اختر نے پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کر لی

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان پیر جون 11:20

پی ٹی آئی نے ن لیگ کی بڑی وکٹ اڑا دی
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔11جون 2018ء) پاکستان تحریک انصاف نے ڈیرہ غازی خان سے بھی ن لیگ کی وکٹ گرا دی ہے۔تفصیلات کے مطابق الیکشن سے قبل بڑا سیاسی جوڑ توڑ جاری ہے اور اس وقت پاکستان تحریک انصاف کا وکٹیں گرانے کا سلسہ بھی جاری ہے۔۔پاکستان تحریک انصاف اس وقت مخالفین کی کئی بڑی اور اہم وکٹیں گرا چکی ہے۔۔پاکستان تحریک انصاف نے ڈیرہ غازی خان سے بھی ن لیگ کی وکٹ گرا دی ہے۔

اور پاکستان مسلم لیگ(ن) کے سابق رکن اسمبلی سردار اختر اور سردار جاوید اختر نے پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کر لی ہے۔نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ڈیرہ غازی خان سے مسلم لیگ (ن)کے سردار اختر نے پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کر لی۔ ان کے ہمراہ سابق ایم پی اے سردار جاوید اختر نے بھی تحریکِ انصاف میں شامل ہونے کا فیصلہ کیا ،ْ دونوں سیاستدانوں نے یہ فیصلہ شاہ محمود قریشی سے ملاقات کے بعد کیا۔

(جاری ہے)

۔ یاد رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے چئیرمین عمران خان نے مخالفین کی 100 سے زائد وکٹیں اڑا دی ہیں۔دوسری سیاسی جماعتوں کے کئی ایم این اے اور ایم پی اے نے تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کی ہے۔ کپتان عمران خان کی تباہ کن باؤلنگ سے کوئی بھی سیاسی جماعت نہ بچ سکی۔مختصر عرصہ میں دوسری جماعتوں کی 100 سے زائد بڑی وکٹیں اڑائیں۔اور ان کو اپنے ساتھ ملا لیا۔

کپتان عمران خان نے پاکستان مسلم لیگ ن ،،پاکستان پپپلز پارٹی،مسلم لیگ ق کی سب سے زیادہ وکٹیں اڑائیں۔جے یو ایف،،اے این پی اور متحدہ بھی عمرا خان کی تباہ کن باؤلنگ کا شکار ہو گئیں۔ کپتان تحریک انصاف کے اقتدار میں آنے کی ہوا بنانے میں کامیاب ہو گئے ہیں۔جس سے سب سے زیادہ مسلم لیگ ن متاثر ہوئی۔۔۔پیپلز پارٹی دوسرے نمبر پر رہی۔کپتان عمران خان نے پنجاب سے پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ق کے بڑے بڑے الیکٹیبلز چھین لیے۔

۔۔مسلم لیگ ن کے60 سے زائد،،،پیپلز پارٹی کے 25 سے اور مسلم لیگ ق کے 15 الیکٹیبلز تحریک انصاف میں شامل ہوئے۔۔دوسری طرف سیاسی مبصرین کے مطابق نواز شریف کے عدلیہ مخالف بیانیے نے پارٹی کو بہت کمزور کر دیا ہے،تاہم دوسری طرف ن لیگ کے صدرشہباز شریف اب اپنی پارٹی میں پوری طرح سے متحرک ہیں اور ان کی کوشش ہے کہ ن لیگ کو پہلے کی طرح ایک مضبوط سیاسی جماعت بنائے رکھیں۔اس سلسلے میں انہوں نے ن لیگ سے ناراض رہنما چوہدری نثار سے بھی ملاقاتیں کی ہیں اور ان کو بھی منانے کی کوششیں کی ہیں۔تا کہ پارٹی ان کی موجودگی میں مضبوط رہے۔