جاوید ہاشمی کے این اے155اور158 کیلئےکاغذات نامزدگی جمع

کاغذات نامزدگی پارٹی پالیسی کے مطابق جمع کرائےہیں،پارٹی جس کو بھی ٹکٹ دے گی،اس کی انتخابی مہم چلاؤں گا۔مسلم لیگ ن کے سینئر رہنماء جاوید ہاشمی

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ پیر جون 14:54

جاوید ہاشمی کے این اے155اور158 کیلئےکاغذات نامزدگی جمع
ملتان(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔11 جون 2018ء) : پاکستان مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء اور سابق سینئر وفاقی وزیر مخدوم جاوید ہاشمی نے این اے155 اوراین اے 158 کیلئے کاغذات نامزدگی جمع کروا دیے ہیں،پارٹی پالیسی کے مطابق کاغذات جمع کرائےہیں،پارٹی جس کو بھی ٹکٹ دے گی،اس کی انتخابی مہم چلاؤں گا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق مسلم لیگ ن کے سینئر رہنماء جاوید ہاشمی نے تمام پارٹی کی جانب سے ٹکٹ نہ دینے سے متعلق تمام افواہوں کو ختم کردیا ہے جن کے تحت جاوید ہاشمی 155 اوراین اے 158 سے الیکشن لڑنا چاہتے ہیں لیکن ن لیگ جاوید ہاشمی کو شاہ محمود قریشی کے مقابلے میں الیکشن لڑنے پر مجبور کررہی ہے۔

ن لیگ کے سینئر رہنماء کا کہنا ہےکہ این اے155 اوراین اے 158 کیلئے کاغذات نامزدگی جمع کروا دیے ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ پارٹی پالیسی کے مطابق کاغذات جمع کرائے ہیں۔ پارٹی جس کو بھی ٹکٹ دے گی،اس کی انتخابی مہم چلاؤں گا۔ گزشتہ روز انہوں نے افطار پارٹی سے خطاب کرتے ہوئے واضح کیا تھا کہ جمہوریت ایک مکمل عمل ہے جس کوجاری رہنا چاہیے۔ میں 11بار ایم این اے منتخب ہوچکا ہوں۔

جوایک ریکارڈ ہے۔میں نے تاحال اپنے کاغذات نامزدگی جمع نہیں کروائے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے میری پارٹی جو بھی ذمہ داری دے گی میں اس کوپوری نبھانے کی کوشش کروں گا۔انہوں نے کہا کہ الیکشن مہم کے دوران اپنی پارٹی مسلم لیگ ن کیلئے گھر گھر جاکر ووٹ مانگوں گا۔۔جاوید ہاشمی نے کہا کہ مسلم لیگ ن میں جب دوبارہ شامل ہوا تواعلان کیا تھا کہ اب الیکشن نہیں لڑوں گا۔

میں نے نوازشریف سے الیکشن لڑنے سے معذرت کی تھی۔ جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ تحریک انصاف نے 150 ٹکٹ ایسے لوگوں کو دیے جوپارٹی میں تھے ہی نہیں۔۔عمران خان سمجھ جائیں سیاست میں کوئی شارٹ کٹ نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن اور تحریک انصاف میں مقابلہ ہے۔ سروے کے مطابق مسلم لیگ ن آگے ہے جبکہ تحریک انصاف ان سرویز کے تحت پیچھے ہے۔واضح رہے مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء جاوید ہاشمی کیخلاف پروپیگنڈا کیا گیا کہ ن لیگ نے جاوید ہاشمی کو شاہ محمود قریشی کے مقابلے میں ٹکٹ دینے کی تیاری کرلی۔

جبکہ جاوید ہاشمی شاہ محمود قریشی کیخلاف نہیں بلکہ شجاع آباد سے الیکشن لڑنے کے حامی ہے۔اسی طرح جاوید ہاشمی نے مسلم لیگ ن سے اپنی میمونہ ہاشمی کیلئے بھی مخصوص نشست کا مطالبہ کردیا ہے۔ دوسری جانب ن لیگ جاوید ہاشمی کو اپنی کی مرضی کے مطابق انتخابی ٹکٹ نہیں دے رہی ہے۔