سندھ ہائی کورٹ نے سانحہ صفورا میں فوجی عدالت کی سزائے موت کے خلاف دہشت گردوں کی اپیلوں کی سماعت 16 اگست تک ملتوی کردی

پیر جون 16:48

سندھ ہائی کورٹ نے سانحہ صفورا میں فوجی عدالت کی سزائے موت کے خلاف دہشت ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 جون2018ء) سندھ ہائی کورٹ نے سانحہ صفورا میں فوجی عدالت کی سزائے موت کے خلاف دہشت گردوں کی اپیلوں کی سماعت 16 اگست تک ملتوی کردی ہے ۔

(جاری ہے)

پیر کو سندھ ہائی کورٹ میں سانحہ صفورا میں سزائے موت پانے والے ملزمان کی اپیلوں کی سماعت ہوئی جہاں دوران سماعت دلائل دیتے ہوئے سرکاری وکیل کا کہنا تھا کہ مجرموں کو ملٹری کورٹ سنگین جرم میں سزا سنائی ہے،ملٹری کورٹ کے فیصلے کے خلاف اپیل سپریم کورٹ میں دائر کی جاسکتی ہے، ملزمان کے وکیل کے جونیئر کی جانب سے درخواست دی گئی جس میں کہا گیا کہ مجرموں کے وکیل حشمت حبیب ایڈووکیٹ بیمار ہیں پیش نہیں ہوسکتے، جس پرعدالت نے مجرموں کو وکیل پیش ہونے کے لیے آخری مہلت دیتے ہوئے اپیلوں کی مزید سماعت 16 اگست تک ملتوی کردی عدالت کا کہنا تھا کہ مجرموں کے وکیل آئندہ سماعت پر پیش نہ ہوئے تو قانون کے مطابق حکم نامہ جاری کردیں گے،،عدالت نے فریقین کو تیاری کرکے پیش ہونے کا حکم دیافوجی عدالت نے دہشت گرد سعد عزیز،طاہر منہاس،اظہر عشرت، حافظ ناصر اور اسد الرحمان کو سزا موت سنائی تھی،فوجی عدالت نے دہشت گردوں کو سانحہ صفورا اور دہشت گردی کے دیگر مقدمات میں سزا موت سنائی تھی درخواست گزار کا کہنا تھا کہ درخواست گزاروں کو فوجی عدالت نے مختلف الزامات میں موت کی سزا سنائی ہے ،مجرمان کے اہل خانہ کو مقدمات کی تفصیلات نہیں بتائی جارہی ،اہل خانہ کی ملاقات کرائی جائے اور سزا پر عمل درآمد روکا جائے ،،سپریم کورٹ کے فیصلوں کی روشنی میں مجرمان کی اپیل دائر کرنے کا موقع دیا جائے ،