چوہدری نثار نے اپنے سے منسوب میڈیا پر چلنے والے بیانات کی تردید کر دی

میڈیا سنی سنائی باتوں کو مجھ سے منسوب نہ کرے،صحت بہترہوتے ہی ساری صورت حال قوم کے سامنےرکھوں گا، چودھری نثار

Syed Fakhir Abbas سید فاخر عباس پیر جون 19:16

چوہدری نثار نے اپنے سے منسوب میڈیا پر چلنے والے بیانات کی تردید کر دی
اسلام آباد(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔11 جون 2018ء) ::چوہدری نثار نے اپنے سے منسوب میڈیا پر چلنے والے بیانات کی تردید کر دی۔چودھری نثار کا کہنا تھا کہ میڈیا سنی سنائی باتوں کو مجھ سے منسوب نہ کرے،صحت بہترہوتے ہی ساری صورت حال قوم کے سامنےرکھوں گا۔تفصیلات کے مطابق چوہدری نثار آجکل قومی میڈیا کی خبروں کی بنے ہوئے جس کی سب سے بڑی وجہ الیکشن کا قریب تر ہونا، مسلم لیگ ن کی قیادت سے سابق وزیر داخلہ کے کشادہ تعلقات اور چوہدری نثار کو ٹکٹ ملنے یا نہ ملنے کے معاملات ہیں۔

ایسے میں سابق وزیر داخلہ چوہدری نثارکے بہت سے بیانات میڈیا کی زینت بن رہے ہیں تاہم آج چوہدری نثار نے میڈیا پر چلنے والے اپنے بیانات پر خاموشی توڑ دی ۔میڈیا کا کہنا تھا کہ میڈیا پر مجھ سے منسوب اکثر بیانات حقیقت پر مبنی نہیں۔

(جاری ہے)

انکا کہنا تھا کہ پچھلے ایک ہفتے سے علیل ہوں اور کسی سیاسی عمل میں حصہ نہیں لیا۔آج اپنے آبائی دیہات اور علاقے کے لوگوں سے ایک مختصر ملاقات ضرور ہوئی۔

یہ ایک نجی ملاقات تھی جس میں میڈیا موجود نہیں تھا۔اپنے سے منسوب میڈیا پر چلنے والے بیانات پر چوہدری نثار کا کہنا تھا کہملاقات میں اکثر وہ باتیں نہیں کیں جو میڈیا پر آرہی ہیں۔میڈیا سنی سنائی باتوں کو مجھ سے منسوب نہ کرے۔صحت بہترہوتے ہی ساری صورت حال قوم کے سامنےرکھوں گا۔یاد رہیں صبح ان سے منسوب ایک بیان میڈیا پر چل رہا تھا جس میں انہوں نے کھل کر مسلم لیگ ن سے مخالفت کا اعلان کیا تھا ۔

اس بیان کے مطابق چوہدری نثار کا کہنا تھا کہ پارٹی نے سیاسی یتیموں کو ٹکٹ دے دیے ہیں۔میں نے منہ کھولا توشریف کہیں منہ دکھانے کے قابل نہیں رہیں گے۔انہوں نے سابق وزیراعظم نوازشریف کو مخاطب کرتے ہوئے تنقید کا نشانہ بنایا اور کہاکہ عورت راج کے مخالف نے آج اپنی بیٹی پارٹی پرمسلط کردی۔ واضح رہے گزشتہ روز چوہدری نثار نے پارلیمانی بورڈ میں ٹکٹ کیلئے درخواست دینے اور بورڈکے سامنے پیش ہوکرٹکٹ مانگنے کے عمل پرشدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ پتا نہیں کیوں مجھے ٹکٹ نہ دینے کا بہانہ بنانے کیلئے مضحکہ خیزڈرامے کیے جارہے ہیں۔ پہلے بھی کہہ چکاہوں کہ نہ ان کے ٹکٹ کا امیدوار ہوں اور نہ ہی محتاج ہوں۔