این اے 131 کےریٹرننگ آفیسرنے 18 جون کوعمران خان کو طلب کرلیا

:ریٹرننگ آفیسراختربھنگونےعمران خان کوکاغذات کی جانچ پڑتال کیلیےبلایاہے

Syed Fakhir Abbas سید فاخر عباس پیر جون 19:40

این اے 131 کےریٹرننگ آفیسرنے 18 جون کوعمران خان کو طلب کرلیا
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔11 جون 2018ء) این اے 131 کےریٹرننگ آفیسرنے 18 جون کوعمران خان کو طلب کرلیا۔ ریٹرننگ آفیسراختربھنگونےعمران خان کوکاغذات کی جانچ پڑتال کیلیےبلایاہے۔تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن کی جانب سے کاغذات نامزدگی جمع کروانے کا آج آخری دن تھا جس کے بعد کاغذات نازمدگی کی جانچ پڑتال کا مرحلہ آئے گا۔۔لاہور کی 14 قومی اسمبلی کی نشستوں پر بڑا اور سیاسی و انتخابی معرکہ ہوگا۔

آج کاغذات نامزدگی جمع کروانے کے آخری دن ::قومی اسمبلی کی14 نشستوں کیلیے100 سےزائدامیدواروں نےکاغذات جمع کروادیے۔۔ایاز صادق نے این اے 133 اور 125 سے کاغذات نامزدگی جمع کروائے۔۔مریم نواز نے این اے127 اور125 سے کاغذات نامزدگی جمع کروائے۔صدرن لیگ شہبازشریف نے این اے132 سے کاغذات نامزدگی جمع کروائے۔

(جاری ہے)

این اے 132 سےپیپلزپارٹی کی ثمینہ خالدگھرکی نےکاغذات نامزدگی جمع کروائے۔

این اے 125 سے ڈاکٹرامبرشہزادہ نےبھی کاغذات نامزدگی جمع کروائے۔۔مسلم لیگ ن کےپرویزملک نے این اے 123 سے کاغذات نامزدگی جمع کروائے۔۔پی ٹی آئی کےجمشید اقبال چیمہ نےاین اے127سےکاغذات نامزدگی جمع کروا دیے۔:برابری پارٹی کےسربراہ گلوکارجواداحمد نےبھی 2حلقوں این اے131 اور132سےکاغذات نامزدگی جمع کرائے۔ پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے این اے 131 سے کاغذات نامزدگی جمع کروا دئیے جہاں انکا مسلم لیگ ن کے رہنما و سابق وفاقی وزیر خواجہ سعد رفیق سے ہوگا۔

تاہم تازہ ترین خبر یہ ہے کہ این اے 131 کےریٹرننگ آفیسرنے 18 جون کوعمران خان کو طلب کرلیا۔ریٹرننگ آفیسراختربھنگونےعمران خان کوکاغذات کی جانچ پڑتال کیلیےبلایاہے۔اس مرحلے پر عمران خان کی جانب سے جمع کروائے گئے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال ہو گی اور اس حوالے سے عمران خان سے مختلف سوال پوچھے جائیں اور کاغذات نامزدگی اس صورت قبول ہو گے اگر عمران خان متعلقہ ریٹرننگ آفسر کو اپنے جوابات سے مطمئن کرنے میں کامیاب رہے۔

یاد رہے کہ سابق چیف جسٹس نے بھی عمران خان کے خلاف سیتا وائٹ کیس دوبارہ کھولنے کا اعلان کیا ہے جس کے بعد خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ مخالفین عمران خان کے خلاف اس کیس کو ہتھیار کے طور پر استعمال کریں گے اور یوں چئیرمین تحریک انصاف پر بھی نااہلی کی تلوار لٹک سکتی ہے۔