ایران میں زیرحراست صوفی قیدیوں کی جبری نظربندی کے خلاف بھوک ہڑتال

قیدیوں کی ہڑتال کا مقصد صوفی فرقے کے دیگر رہ نماؤں کی جبری قید یا نظر بندی کو ختم کرنا ہے،رپورٹ

منگل جون 14:12

تہران(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 جون2018ء) ایران میں زیرحراست صوفی شیعہ فرقے کے آٹھ ارکان نے حکومتی مظالم اور فرقے کے ایک سرکردہ رہ نما نور علی تابندہ کی جبری نظر بندی کے خلاف جیل میں بھوک ہڑتال شروع کردی ہے۔امریکی ٹی وی کے مطابق ایران کے گونا بادین الدراویش جنہیں صوفی شیعہ کہا جاتا ہے کہ آٹھ ارکان نے تہران میں قائم ایفین جیل میں بھوک ہڑتال شروع کی ہے۔

(جاری ہے)

قیدیوں کا مطالبہ ہے کہ نور علی تابندہ کی جبری نظربندی فوری ختم کی جائے اور جیلوں میں ڈالے تمام کارکنوں کو رہا کیا جائے۔ ایفین جیل میں گذشتہ کئی روز سے ظفر علی مقیمی، محسن عزیزی، محمد باقر مقیمی، علی جمشیدی، حسن فھیمی، مصطفیٰ شیرازیان اور محمد علی کرمی نے بھوک ہڑتال شروع کر رکھی ہے۔ان لوگوں کی ہڑتال کا مقصد صوفی فرقے کے دیگر رہ نماؤں کی جبری قید یا نظر بندی کو ختم کرنا اور ان کے ساتھ ہونے والی ناانصافیوں کی روک تھام کرنا ہے۔

متعلقہ عنوان :