پیپلزپارٹی نےآصفہ بھٹو کوضمنی الیکشن لڑانے کا فیصلہ کر لیا

آصفہ بھٹو لیاری کو اپنا مستقل انتخابی حلقہ بنانا چاہتی ہیں،بلاول بھٹو الیکشن جیتنے کے بعد لیاری کی نشست چھوڑ دیں گے،اسی لیے آصفہ بھٹو کو ضمنی الیکشن میں ٹکٹ دیا جائے گا۔ذرائع پیپلزپارٹی

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ منگل جون 15:22

پیپلزپارٹی نےآصفہ بھٹو کوضمنی الیکشن لڑانے کا فیصلہ کر لیا
کراچی(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔12 جون 2018ء) : پاکستان پیپلزپارٹی نے آصفہ بھٹو کو ضمنی الیکشن لڑانے کا فیصلہ کر لیا ہے،جس کے باعث آصفہ بھٹو کو عام انتخابات میں ٹکٹ نہیں دیا جائے گا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق پاکستان پیپلزپارٹی نے سندھ میں قومی اور صوبائی اسمبلی کے امیدواروں کو انتخابی ٹکٹس جاری کردیے ہیں۔تاہم چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے اپنی ہمشیرہ آصفہ بھٹو کو انتخابی ٹکٹ جاری نہیں کیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ آصفہ بھٹو کو انتخابی ٹکٹ جاری نہ کرنے کی وجہ یہ ہے کہ پیپلزپارٹی کی قیادت آصفہ بھٹو کو کراچی کے حلقے لیاری سے الیکشن لڑوانا چاہتی ہے۔تاہم کراچی میں لیاری کے انتخابی حلقے این اے 247سے چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں۔

(جاری ہے)

اسی طرح بلاول بھٹو زرداری لاڑکانہ میں این اے 200سے بھی انتخابی میدان میں اتریں گے۔

بلاول بھٹو کے لیاری سے الیکشن لڑنے ے باعث آصفہ کو انتخابی ٹکٹ نہیں دیا گیا۔ عام انتخابات 2018ء کے بعد جب بلاول بھٹو زرداری دونوں انتخابی حلقوں سے الیکشن جیت جائیں گے توانہیں ایک انتخابی حلقہ چھوڑنا ہوگا۔۔بلاول بھٹو لاڑکانہ کی نشست اپنے پاس رکھیں گے جبکہ لیاری کی نشست چھوڑ دیں گے۔بعد میں لیاری سے ضمنی الیکشن میں آصفہ بھٹو میدان میں اتریں گی۔

پارٹی رہنماء کا کہنا ہے کہ چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو دونوں نشستوں سے الیکشن جیت جائیں گے۔دوسری جانب آصفہ بھٹو لیاری کو اپنا مستقل انتخابی حلقہ بنانا چاہتی ہیں۔ آصفہ بھٹو نے لیاری میں بہت سارے ترقیاتی کام بھی کروائے اور ووٹرز سے اچھی جان پہچان بھی بنا لی ہے۔۔لیاری میں ووٹرز اور سپورٹرزنے آصفہ بھٹو کو ہرحال میں جتوانے کا تہیہ کررکھا ہے۔تاہم لیاری کے عوام کا کہنا ہے کہ اب چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کو الیکشن جتوا کرثابت کردیں گے کہ لیاری ماضی میں بھی پیپلزپارٹی کا انتخابی حلقہ تھا اور اب بھی پیپلزپارٹی کا ہی حلقہ ہے۔