پاناما کے سابق صدر کو واپس وطن بھیج دیا جائے گا،مارتینیلی جاسوسی کے الزام کی سزا کاٹ رہے ہیں وزارت خارجہ

منگل جون 16:46

واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 جون2018ء) امریکی محکمہ خارجہ نے کہا ہے کہ پاناما کے سابق صدر کو واپس وطن بھیجا جائے گا،مارتینیلی امریکہ میں جاسوسی کے الزام کی سزا کاٹ رہے ہیں۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق پاناما کے سابق صدر ریکارڈو مارتینیلی کو امریکہ نے ان کے ملک واپس بھیجنے فیصلہ کر لیا ہے۔یاد رہے کہ وہ جاسوسی کے الزام میں امریکہ کی ایک جیل میں سزا بھگت رہے ہیں۔

(جاری ہے)

خبر کے مطابق، سابق صدر مارتینیلی کے وکیل نے تصدیق کی ہے ۔اس سے پیشتر، پاناما کے صدر یواں کارلوس ورلا کا کہنا تھا کہ محکمہ خارجہ نے مارتینیلی کو ان کے حوالے کرنے کی درخواست مان لی ہے۔مارتینیلی 2015میں اقتدار کے خاتمے پر امریکہ چلے گئے تھے جہاں انہیں جاسوسی کے الزام میں گزشتہ سال جون میں گرفتار کیا گیا تھا جبکہ ان پر2009 سے 2014 تک اپنے دور صدارت میں سرکاری فنڈ استعمال کر کے حزب اختلاف کے 150 رہنماں کی جاسوسی کا الزام تھا۔