ڈیرہ مرادجمالی ،نامعلوم افراد نے کھیتوں کو آگ لگادی،کسانوں کا لواحقین کے ہمراہ احتجاجی مظاہرہ و دھرنا

منگل جون 18:44

ڈیرہ مرادجمالی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 جون2018ء) تحصیل چھتر کے علاقے پیروپل میں نامعلوم افراد نے کھیت میں رکھی گئی چنا،گندم سمیت دیگر اناج کو آگ لگادی ،فصل نذراآتش کرنے کیخلاف کسانوں کا لواحقین کے ہمراہ پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ اوردھرنا ملزمان کو فوری گرفتار کرنے کامطالبہ ۔تفصیلات کے مطابق تحصیل چھترکے علاقے میرحسن کیمپ گوٹھ میر پیربخش شرکے مقامی کسانوں بزگروں امام دین ڈیتھا،جان محمد ماچھی ،اور علی محمد ماچھی نے اپنے خواتین اور بچوں کے ہمراہ پریس کلب ڈیرہ مرادجمالی کے سامنے احتجاجی دھرنااور مظاہرہ کرتے ہوئے صحافیوں کوبتایاکہ ہم محنت مزدوری کرکے اپنی گزرسفر کرتے ہیں مگرنامعلوم افراد نے کچھ گزشتہ روز 100ایکڑ کے لگ بھگ کروڑوں روپے مالیت کی چنے گندم اور دیگر ذخیرہ کردہ اناج کو آگ لگا کرتباہ کردیا گیا جس کی وجہ سے ہمارجمع پونجی جل خاکسترہوگئی ہے ہم متحدمزدوری کرکے اپنی فصلات کوتیارکرکے بزگری کے ذریعے اپنے بچوںکوپیٹ پال رہے ہیںہماری فصلیں جلنے کے باعث ہم فاقہ کشی پرمجبورہوگئے ہیں ۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ ایک قبیلے کے آپسی دشمنی کے باعث ہماری جمع پونجی فصلوں کوتباہ کرناناانصافی کے مترادف ہے ہمارے ساتھ انتہائی ظلم و ذیادتی ہوئی ہے اب ہمیںکھانے پینے کیلئے بھی کچھ نہیں بچاہم بے بس اورمجبورلوگ کس کے سامنے ہاتھ پھیلائیں انہوںنے کہاکہ میرحسن پولیس تھانہ میں اطلاع کے باوجودملزمان کوگرفتارنہیں کیا جارہا ہے ۔انہوںنے چیف جسٹس بلوچستان،، آئی جی پولیس اورچیف سیکرٹری سے اپیل کی ہے کہ وہ ہمیں انصاف فراہم کرنے کے ساتھ ہمارے نقصان کاازالہ کیا جائے ۔