الیکشن ہوںگے ہوتے نظر نہیں آئیںگے،حافظ حسین احمد

شریف خاندان کی کوشش یہ ہے کہ عدالتی فیصلہ عوام کے فیصلے کے بعد آئے ْسپریم کورٹ اس پر مصر ہے کہ کورٹ ہی سپریم ہے اس کا فیصلہ بھی پہلے آنا چاہیے،پریس کانفرنس

منگل جون 20:41

جہلم(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 جون2018ء) الیکشن ہوںگے ہوتے نظر نہیں آئیںگے،کیونکہ شریف خاندان کی کوشش یہ ہے کہ عدالتی فیصلہ عوام کے فیصلے کے بعد آئے،،سپریم کورٹ اس پر مصر ہے کہ کورٹ ہی سپریم ہے اس کا فیصلہ بھی پہلے آنا چاہیے،ان خیالات کااظہار ایم ایم اے کی مرکزی رابطہ کمیٹی کے چیئرمین جمعیت علماء اسلام ف کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات حافظ حسین احمد نے اسلام آبا د سے لاہو ر جاتے ہوئے جہلم میں صحافیوں سے ایک پریس کانفرنس میں کیا،اس موقع پر چوہدری وجاہت اور عرفان طارق ،وقاراحمد،میاں رفیق احمد،قاری عبدالودود خان،قاری ظفراقبال،عبدالوحید بٹ کے علاوہ جمعیت کے سینکڑوں کارکن موجود تھے،انہوں نے کہا کہ جنہوں نے وفاداری تبدیل کی ہے وہ بھی ایک تبدیلی ہے،اس لیے کہ نئے شامل ہونے والے خود تبدیلی کا سیمپل بنے ہوئے ہیں اس لیے جو تبدیلی آنی تھی وہ آگئی ہے ،انہوں نے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی کو ماضی میں بندوں سے زیادہ بندیاں میسر تھیں،اب غالباً دونوں صعنف لینے سے گریزاں نظر آرہے ہیں،جبکہ فارم میں تیسرے کی گنجائش نہیں ہے،بہرحال آزاد منش کا دور آنے والا ہے ،اور آزادی بڑی نعمت ہے اگر کسی کو میسر ہو سکے۔

(جاری ہے)

انہوں نے مسلم لیگ ن کی طرف سے بائیکاٹ کے ایک سوال پر کہا کہ بائیکاٹ کرنے والا ہی خسارے میں ہوگا،اور اگر ان کے بائیکاٹ کی وجہ سے انتخابات ملتوی ہوتے ہیں تو ذمہ داری بھی انہی پر عائد کی جائیگی۔انہوں نے کہا کہ ایم ایم اے کی قیادت فاٹا کے حوالے سے متفقہ درمیانہ لائحہ عمل بنانے میں کامیاب ہوگی۔انہوں نے کہا کہ چوہدری نثار کو مسلم لیگ ن اس شرط پر ٹکٹ دے گی کہ وہ گھٹنوں کے بل وصول کریں جس کیلئے چوہدری نثار جیسا جانثار تیار نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہماری کوشش ہے تمام مذہبی ووٹ زیادہ تقسیم نہ ہوں جبکہ تمام مذہبی جماعتیں ایک پلیٹ فارم پر ملکر الیکشن لڑیں،جس کیلئے باہمی سیٹ ایڈجسمنٹ کر کے اس مسئلے کا حل نکال لیا جائیگا جبکہ لیبک یارسول ﷺ کے قائدین سے بھی رابطہ ہے۔