چین نے جوہری ری ایکٹر کی سلامتی کو یقینی بنانے کیلئے نیا سسٹم تیار کر لیا

نیا سسٹم فوکو شیما جیسے بحران کی روک تھا م کیلئے بجلی کے بغیر کام کر سکتا ہے ،وزارت سائنس و ٹیکنالوجی

بدھ جون 14:38

بیجنگ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 جون2018ء) چین نے ایک ایسا نظام بنایا ہے جو بجلی استعمال کئے بغیر فوکو شیما جیسے بحرانوں کے دوران جوہری ری ایکٹر کی سلامتی کو یقینی بن سکتا ہے ،وزارت سائنس و ٹیکنالوجی کی رپورٹ کے مطابق تھرڈ جنریشن نیو کلیئرر ٹیکنالوجی کے چینی جدید ماڈل کے ساتھ مشرقی چین کے صوبہ شن ڈائونگ میں سی اے پی 1400 جوہری ری ایکٹروں نے چھ کے چھ اہم فنی ٹیسٹ پاس کر لیے ہیں جن میں ایک وہ ٹیسٹ بھی شامل ہے جس میں پیسے سیفٹی سسٹم شامل ہے ،ٹیسنگہوا یونیورسٹی نے نیوکلیئرر سسٹم کے ایک ماہر گوئی نمنگ نے جرید ہ گلوبل ٹائمز کو بتایا کہ ’’ایکٹوسیفٹی سسٹم کے برعکس پیسے سیفٹی سسٹم بجلی کی مدد کے بغیر کام کر سکتے ہیں اور ری ایکٹر کوکسی حادثے کے رونما ہونے کی صورت میں گردونواح کے ماحول میں تابکاری مواد خارج کرنے سے روک سکتا ہے ۔

(جاری ہے)

مرکزی کابینہ کے ترقیاتی تحقیقی مرکز کے ایک محقیق وانگ ژی ننگ نے بتایا کہ سی اے پی 1400ری ایکٹر 1400سے لے کر 1500میگا واٹ کی قوت کا حامل ہے یہ ایسی شرح ہے جسے امریکی کمپنیوں نے پیس سیفٹی سسٹم کیلئے ناممکن خیال کیا ہے ، سی اے پی 1400 اے پی 1000کا توسیع شدہ ماڈل ہے ، اے پی 1000امریکی نیوکلیئر فارم ویسٹنگ ہائوس الیکٹرک کمپنی کی ترمیم شدہ ٹیکنالوجی کی بنیاد پر بنایا گیا ہے اس طرح مجموعی پاور 1250میگا واٹ سے بڑھا کر 1400میگا واٹ کر دی گئی ہے ۔شنہوا کی اطلاع کے مطابق 2016کے آواخر تک چین میں 35جوہری ری ایکٹر تجارتی استعمال میں ہیں ۔