تل کی کاشت پر خرچ کم اور فی یونٹ آمدنی زیادہ ہے ،

فصل نقد آور فصل کا درجہ اختیار کرگئی ہے ، ترجمان محکمہ زراعت

بدھ جون 15:24

فیصل آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 جون2018ء) ترجمان محکمہ زراعت پنجاب ریسرچ انفارمیشن یونٹ فیصل آباد نے کہا ہے کہ تل کم دورانیہ کی ایک اہم تیلدار فصل ہے اس کے بیجوں میں 50فیصد سے زیادہ خوردنی تیل اور تقریباً 22فیصد سے زیادہ پروٹین موجود ہوتی ہے۔ اس کی خصوصیات زیتون سے ملتی ہیں تل کا تیل ادویات سازی اور بیکری کی مصنوعات میں استعمال ہوتا ہے ۔

تل کی ملکی اور بین الاقوامی مانگ میں دن بدن اضافہ ہورہا ہے۔

(جاری ہے)

ترجمان نے کہا کہ تل کی کاشت پر خرچ کم اور فی یونٹ آمدنی زیادہ ہے جس کی وجہ سے یہ فصل نقد آور فصل کا درجہ اختیار کرگئی ہے۔ تل کی کاشت کا بہترین وقت 15جون سے 15جولائی ہے تل کی فصل کے لیے بھاری میرا زمین جس میں نمی برقرار رکھنے اور نکاسی آب کی صلاحیت ہو زمین موزوں ہے۔ ترجمان نے کاشتکاروں کو ہدایت کی کہ وہ سفید تل کی منظور شدہ اقسام ٹی ایچ 6 اور ٹی ایس 5کاشت کریں۔ یہ اقسام ضرررساں کیڑوں اور بیماریوں کے خلاف قوت مدافعت رکھتی ہیں۔

متعلقہ عنوان :