وزیر آباد انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی کو مکمل فنکشنل کرنے کے اقدامات کئے جائیں‘جواد ساجد خان

نگران سیٹ اپ میں ہیلتھ کیئر ڈلیوری سسٹم کو بہتر طور پر چلانے کی کوشش کروں گا‘وزیر صحت پنجاب

بدھ جون 16:25

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 جون2018ء) وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر جواد ساجد خان نے محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن کو ہدایت کی ہے کہ وزیر آباد انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی کو مکمل طور پر فنکشنل کرنے ، کارڈیک سرجریز شروع کرنے کے لئے فوری اقدامات کئے جائیں اور ڈبلیو آئی سی میں ایمر جنسی سہولیات کا بھی فوری اجراء کیا جائی-انہوں نے یہ بات محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر کی جانب سے محکمانہ بریفنگ کے دوران کہی - سیکرٹری ہیلتھ نجم احمد شاہ نے وزیر صحت ڈاکٹر جواد ساجد خان کو محکمہ کی کارکردگی اور ہونے والے ترقیاتی کاموں بارے بریفنگ دی- اس موقع پر سپیشل سیکرٹری ہیلتھ (ایڈمن) ثاقب منان، سپیشل سیکرٹری ڈویلپمنٹ عثمان معظم اور پروفیسر محمود شوکت بھی موجودتھی- نجم احمد شاہ نے وزیر صحت کو بتایا کہ ٹرشری کیئر ہسپتالوں اور سپیشلائزڈ انسٹیٹیوشنز میں پانچ سال میں پانچ ہزار بیڈز کا اضافہ کیا گیا ہے جس میں سے تین ہزار بیڈز دوبرسوں کے دوران شامل کئے گئے ہیں- 12بڑے پراجیکٹس 26ارب روپے کی خطیر رقم سے دو برسوں میں مکمل کئے گئے جن میںمیوہسپتال کا سرجیکل ٹاور بھی شامل ہے جو پوری طرح فنکشنل ہوچکا ہی- نجم احمد شاہ نے بتایا کہ وزیر آبادانسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے آپریشن تھیٹرز مکمل ہوچکے ہیں تمام میڈیکل آلات اور مشینری نصب کی جاچکی ہے اور پروفیسر آف کارڈیک سرجری بھی تعینات کردیا گیا ہے اور آئندہ ایک دو ہفتوں میں دل کے بائی پاس آپریشنوں کا آغاز کردیا جائے گا- وزیر صحت نے کہا کہ ہیلتھ سیکٹر ڈویلپمنٹ پر قوم کے اربوں روپے خرچ ہوئے ہیں اس ترقی کا فائدہ غریب اور مستحق مریضوں کو براہ راست پہنچنا چاہئے کیونکہ سرکاری ہسپتالوں میں مریضوں کی اکثریت غریب ہوتی ہی-سیکرٹری ہیلتھ نجم احمد شاہ نے مزید بتایا کہ حکومت نے 40کروڑ روپے کی لاگت سے شیخ زائد ہسپتال لاہور کے لیور ٹرانسپلانٹ سینٹر کو اپ گریڈ کردیا ہے جبکہ صوبے میں چار سٹیٹ آف دی آرٹ برن سینٹرز میوہسپتال ، نشتر ہسپتال ، جناح ہسپتال اور الائیڈ ہسپتال میں فنکشنل ہیں- نجم احمد شاہ کا کہنا تھا کہ سینٹرل انڈکشن پالیسی سے پوسٹ گریجوایٹ ٹریننگ پروگرام کو میرٹ اور شفافیت کی بنیاد پر استوار کیا ہے جس سے ان شعبوں میں بھی بڑی تعداد میں PGٹرینی ڈاکٹرز نے داخلہ لیا ہے جو شعبے پہلے نظر انداز تھی- سینٹرل انڈکشن پالیسی کے تحت ڈاکٹرز کو خصوصی نمبر دینے سے بنیادی مراکز صحت میں میڈیکل آفیسرزپہنچ چکے ہیں- انہوں نے بتایا کہ اب کوئی PGٹرینی ڈاکٹر اعزازی خدمات سرنجام نہیں دیتا بلکہ تمام سیٹیں پیڈ ہیں- وزیر صحت نے ٹیچنگ ہسپتالوں میں موجود 901وینٹی لیٹرز کی فعالیت چیک کرنے کے لئے خصوصی انسپکشن کرانے کی ہدایت کی - انہوں نے کہا کہ سی ٹی سکین ٹیسٹ کی درست تشخیص کرنے اور رپورٹ پڑھنے کے لئے سینئر ریڈیالوجٹس پر مشتمل آن لائن گروپ تشکیل دیا جائی-انہوں نے سپیشلائزڈ ہیلتھ کے شعبہ میں کئے گئے اقدامات کو سراہا اور سیکرٹری نجم احمد شاہ کی انتظامی صلاحیتوں کی تعریف کی۔