بچوں کے ریپ اسکینڈل میں ملوث چلی کے 3 پادریوں کے استعفے منظور، پوپ فرانسس

بدھ جون 17:33

سینتیاگو(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 جون2018ء) پوپ فرانسیس نے ریپ اسکینڈل میں ملوث چلی کے 3 پادریوں کے استعفے منظور کرلیے،غیر ملکی ذرائع ابلاغ کے مطابق پوپ فرانسیس نے بچوں کے ساتھ ریپ کے اسکینڈل میں ملوث چلی کے 3 پادریوں کے استعفے منظور کرلیے ہیں۔مہر خبررساں ایجنسی نے فرانسیسی خبررساں ایجنسی کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ پوپ فرانسیس نے بچوں کے ساتھ ریپ کے اسکینڈل میں ملوث چلی کے 3 پادریوں کے استعفے منظور کرلیے ہیں۔

منظور کیے گئے استعفوں میں بشپ جوئن باروس کا بھی استعفی ہے جن پر ریپ کے کیس کو چھپانے کی کوشش کا الزام ہے۔ذرائع کے مطابق ویٹی کین میں پوپ فرانسیس کے ساتھ طویل مشاورت کے بعد چلی کے پادریوں نے اپنے استعفے پیش کیے۔ اس حوالے سے کہا جارہا ہے کہ پادریوں کی جانب سے پیش کردہ مشترکہ استعفی دو دہائی قبل دیا گیا۔

(جاری ہے)

واضح رہے کہ جنوبی امریکی ریاست چلی میں کیتھولک چرچ کی اعلی شخصیات پر الزام ہے کہ انہوں نے 80 اور 90 ویں کی دہائی کے درمیانی عرصے میں پادری فرنینڈوکرادیما کے بچوں کے ساتھ جنسی جرائم پر پردہ ڈالنے یا نظرانداز کرنے کی کوششیں کیں۔

رواں برس جنوری میں 61 سالہ بشپ جوئن باروس پر الزام تھا کہ انہوں نے فرنینڈو کرادیما کی خرافات کو چھپانے کی کوشش کی۔ واضح رہے کہ چلی میں سال 2000 کے بعد سے اب تک 80 کیتھولک پادریوں کے خلاف بچوں کے ساتھ ریپ کے کیس درج ہو چکے ہیں۔

متعلقہ عنوان :