اسلام آباد ہائی کورٹ کے واضح احکامات کے باوجود رجسٹریشن نہ کرنا انتہائی افسوسناک ہے،ترجمان ملی مسلم لیگ

بدھ جون 20:30

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 جون2018ء) ملی مسلم لیگ کے ترجمان تابش قیوم نے الیکشن کمیشن کی جانب سے ملی مسلم لیگ کی رجسٹریشن کی درخواست مسترد کیے جانے پر شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ کے واضح احکامات کے باوجود رجسٹریشن نہ کرنا انتہائی افسوسناک ہے۔ وزارت داخلہ کی الیکشن کمیشن میں پیش کردہ رپورٹ جھوٹ کا پلندہ ہے۔

حکومتی ذمہ داران محض بیرونی آقائوں کی خوشنودی کے لیے غیر قانونی اور غیر آئینی حرکتوں کا ارتکاب کر رہے ہیں۔ ملی مسلم لیگ الیکشن کمیشن کے حالیہ فیصلہ کو اعلیٰ عدالتوں میں چیلنج کرے گی۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ حکومت بھارتی دبائو پر ملی مسلم لیگ کی رجسٹریشن کی راہ میں رکاوٹیں کھڑی کر رہی ہے اور اسی سبب الیکشن کمیشن حکام جانبداری کا مظاہرہ کرتے ہوئے عدالتی احکامات بھی تسلیم نہیں کر رہے۔

(جاری ہے)

ملی مسلم لیگ ایک پرامن سیاسی جماعت ہے جو آئین اور قانون کے مطابق اپنی سیاسی سرگرمیاں جاری رکھنے کا حق رکھتی ہے۔ حکومت آج تک ملی مسلم لیگ کے عہدیداران کے خلاف کوئی ایسا جواز پیش نہیں کر سکی جس کی بنا پر رجسٹریشن روکی جاسکتی ہو۔ یہی وجہ ہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے الیکشن کمیشن کو رجسٹریشن سے متعلق واضح ہدایات دی تھیں جن پر عمل نہیں کیا گیا۔ ترجمان نے کہاکہ ملی مسلم لیگ کی رجسٹریشن نہ کر کے لاکھوں پاکستانی شہریوں کو ان کے بنیادی حق سے محروم رکھا جارہا ہے۔