پرویزرشید اخلاقی، سیاسی اورنظریاتی پیمانے پرپورا نہیں اترتے

پرویزرشید جیسے لوگ خوشامد کی بدترین مثال ہیں،پرویز رشید کے کرتوت سامنے آجائیں توسرشرم سے جھک جائیں۔ سابق وزیرداخلہ چوہدری نثار کا پرویز رشید کے بیان پرردعمل

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ بدھ جون 20:15

پرویزرشید اخلاقی، سیاسی اورنظریاتی پیمانے پرپورا نہیں اترتے
لاہور(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔13 جون 2018ء) : پاکستان مسلم لیگ ن کے ناراض مرکزی رہنماء اور سابق وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خا ن نے کہا ہے کہ پرویزرشید اخلاقی ، سیاسی اور نظریاتی پیمانے پرپورا نہیں اترتے،،پرویز رشید جیسے لوگ خوشامد کی بدترین مثال ہیں،،پرویز رشید کے کرتوت سامنے آجائیں توسرشرم سے جھک جائیں۔میڈیا رپورٹس کے مطابق سابق وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خاں نے سینئر پارٹی رہنماء پرویز رشید کے بیان پرردعمل دیتے ہوئے کہا کہ پرویز رشید جیسے لوگ خوشامد کی بدترین مثال ہیں۔

پرویز رشید نے پارٹی میں خوشامد کومنشور کا حصہ بنوایا۔۔پرویز رشید کے کرتوت سامنے آجائیں توسرشرم سے جھک جائیں۔انہوں نے کہا کہ پارٹی غداروں نے ن لیگ کو فیملی پارٹی بنانے کے مشورے دیے۔

(جاری ہے)

انہی لوگوں نے پارٹی پرسیکولر نظریہ مسلط کیا ہے۔انہوں نے کہاکہ پرویز رشید اخلاقی ، سیاسی اور نظریاتی پیمانے پرپورا نہیں اترتے۔ واضح رہے گزشتہ روز مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء پرویز رشید نے سابق وزیرداخلہ چوہدری نثار کے پارٹی اور پارٹی قائد نوازشریف کیخلاف بیان پر ردعمل دیتے ہوئے کہا تھا کہ چوہدری نثار نے ٹکٹ مانگا ہی نہیں ہے۔

جب کوئی ٹکٹ مانگتا ہے تواس کوٹکٹ دیا جاتا ہے۔ انہوں نے ایک سوال کہ چوہدری نثارآزاد الیکشن لڑرہے ہیں؟ جس پرانہوں نے جواب دیا کہ چوہدری نثار ہمارے خلاف الیکشن لڑیں یا آزاد حیثیت میں الیکشن لڑیں یہ ان کی صوابدید ہے۔ واضح رہے نجی ٹی وی کوخصوصی انٹرویو دیتے ہوئے چوہدری نثار نے کہا کہ آئین اور قانون کی بات کرنے والوں کوپارٹی آئین کی پاسداری بھی کرنی چاہیے۔

پارٹی آئین میں پارٹی قائد کا کوئی عہدہ نہیں ہے۔پارٹی میں صدر کاعہدہ ہویا کوئی اور عہدہ ہو کوئی بھی عہدہ تاحیات نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ میرے ساتھ اور دوستوں نے بھی پارٹی کی ایک ایک اینٹ لگائی۔ آج وہ دوست بھی مسلم لیگ ن کے ساتھ نہیں۔ چوہدری نثار نے کہا کہ پارٹی میں مجھے موجودہ حالات تک پہنچانے کی وجہ ایک ہے۔ مریم نوازصرف نوازشریف کی بیٹی ہیں۔

پارٹی کے اندرموروثی سیاست کی کوئی گنجائش نہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ بات پہلے بھی کہی ہے آج بھی اس بات پرقائم ہوں کہ مجھے علم نہیں مریم اور نوازشریف بطور قائد کیا چاہتے ہیں۔ سابق وزیرداخلہ نے کہا کہ آزادحیثیت میں الیکشن لڑنے کیلئے مشاورت کررہا ہوں۔ آزاد الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا توباضابطہ اعلان کروں گا۔ انہوں نے واضح کیا کہ میں نے پوری زندگی شیرکے نشان کیلئے درخواست نہیں دی۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ حالات کسی کی سازش نہیں اپنی غلطیوں کا نتیجہ ہے۔ اپنی غلطیوں کا بدلہ ریاست سے لینا مناسب نہیں۔ سابق وفاقی وزیرداخلہ چوہدری نثار نے کہا کہ ڈان لیکس اجلاسوں میں نوازشریف نے ایک لفظ بھی نہیں بولا۔ ڈان لیکس اجلاسوں میں نوازشریف ،میں اوراسحاق ڈار شریک ہوتے تھے۔