چین ایس سی او کے ممبر ممالک کی فلمی صنعت کیساتھ اپنیتجربات کے تبادلے پر تیار ہے

پہلے ایس سی او فلم فیسٹیول کی افتتاحی تقریب سے چینی محکمہ فلم کے سربراہ کا خطاب فیسٹیول میں پاکستان کی پانچ فلموںکی نمائش کی جائے گی،سلطانہ صدیقی جیوری ممبرہیں

جمعرات جون 16:04

بیجنگ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 جون2018ء) چین کے شہر چھینگ تائو میں پہلے ایس سی او فلم فیسٹیول کی افتتاحی تقریب منعقد ہوئی۔سی پی سی کی مرکزی کمیٹی کے شعبہ نشرو اشاعت کے ایگزیکٹو وائس منسڑ اور ریاستی فلم ایڈمنسٹریشن کے سربراہ وانگ شیائو خوئی نے فلم فیسٹیول میں شریک ایس سی او کے ممبر اور مبصر ممالک کے وفود کا خیر مقد م کیا۔انہوں نے کہا کہ فیسٹیول ثقافتی تبادلے کا اہم ذریعہ ہے۔

اس سے ایس سی او کے ممبر ممالک کے درمیان عوامی رابطوں اور ہم نصیب معاشرے کے قیام میں مدد ملے گی۔۔فلم فیسٹیول میں ممبر ممالک کی پچپن فلموں کی نمائش کی جائیگی اور آٹھ ممبر ممالک سے دو سو سے زائد افراد شریک ہوں گے۔ انہوں نے کہا چین کی فلمی صنعت بہت بڑی ہے۔ چین میں سالانہ سات سو فلمیں تیار کی جاتی ہیں اور پچپن ہزار سے زائد سینما گھر ہیں۔

(جاری ہے)

چین ایس سی او کے ممبر ممالک کی فلمی صنعت کے ساتھ اپنی مہارت شیئر کرنے پر تیار ہے فلم فیسٹیول میں پاکستان کی پانچ فلموں،جوانی پھر نہیں آنی، پنجاب نہیں جائوں گی، پرچی،بن روئے، اور چلے تھے ساتھ کی نمائش کی جائے گی۔۔پاکستان کی ٹی وی انڈسٹری کی ایک معروف شخصیت سلطانہ صدیقی فلم فیسٹیول کی جیوری ممبر ہیں جبکہ پاکستانی وفد کی سربراہی وزارت اطلاعات کی ایکسڑنل پبلسٹی ونگ کی ڈائریکٹر محترمہ امبرین جان کر رہی ہیںچین میں تعینات پاکستان کے سفیر مسعود خالد اور ایس سی او کے سیکرٹری جنرل نے بھی فلم فیسٹیول میں شرکت کی۔

متعلقہ عنوان :