سعودی عرب ، فرقہ وارانہ سرگرمیوں پر پانچ سال قیدیا30 لاکھ ریال جرمانہ کا سخت قانون منظور

جمعرات جون 17:21

سعودی عرب ، فرقہ وارانہ سرگرمیوں پر پانچ سال قیدیا30 لاکھ ریال جرمانہ ..
ریاض(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 جون2018ء) سعودی عرب میں فرقہ وارانہ سرگرمیوں پر پانچ سال قیدیا30 لاکھ ریال جرمانہ کا سخت قانون منظور کر لیا گیا۔غیر ملکی نمیڈیا کے مطابق سعودی عرب کے پراسیکیوٹر جنرل نے ملک میں تعصب کو ہوا دینے اور فرقہ وارانہ مہم جوئی کرنے والے عناصر کے خلاف سخت قانون منظور کیا ہے۔

(جاری ہے)

مملکت میں فرقہ وارانہ نعرے بازی کی تیاری، تعصب اور ملک دشمنی پر مبنی لٹریچر تیار کرنے اور اسے دوسروں تک پہنچانے والے عناصر کو پانچ سال قید یا 30 لاکھ ریال جرمانہ یا دونوں سزائیں دی جاسکیں گی۔

سعودی حکام کا کہنا ہے کہ انٹرنیٹ یا سوشل میڈیا کے ذریعے سعودی عرب میں نظام عام میں خلل ڈالنے، فرقہ واریت کو فروغ دینے، تعصبات کو ہوا دینے، مروجہ دینی آداب واقدار کے خلاف کام کرنے، شہریوں کی پرائیویسی میں مداخلت کرنے یا اس طرح کے دیگر جرائم میں ملوث افراد کو ان کے جرم کی حیثیت کے مطابق قید اور جرمانے یا دونوں سزائیں دی جاسکیں گی۔