عیدالفطر کل منائی جائے گی‘سب سے بڑااجتماع مرکزی عیدگاہ میں‘نمازعید8بجے اداہو گی

وزیراعظم، وزراء کرام،چیف جسٹس صاحبان مرکزی عیدگاہ میں نماز عیداداکریں گے اسکے بعد مرکزی عیدگاہ سے ’یکجہتی کشمیرریلی‘ بھی نکالی جائے گی ، قیادت وزیراعظم راجہ فاروق حیدرکریں گے

جمعہ جون 14:44

مظفرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 جون2018ء) ملک بھر سمیت آزادومقبوضہ کشمیر میں کل عیدالفطردینی جوش و جذبہ اور انتہائی عقیدت و احترام سے منائی جائے گی،ملک بھر کی عیدگاہوں ‘ بعض مقامات پر مساجد و مدارس اور خانقاہوں میںبھی عید کے بڑے اجتماعات منعقدہونگے جبکہ آزادکشمیر میں حسب سابق مرکزی سیرت کمیٹی کے زیراہتمام مرکزی عیدگاہ میںعیدالفطرکاسب سے بڑااجتماع منعقدہوگا جہاںنمازعید8بجے اداکی جائے گی‘نمازعیدکے بعد مرکزی عیدگاہ سے’’یکجہتی کشمیرریلی‘‘ بھی نکالی جائے گی ،ریلی کی قیادت وزیراعظم راجہ محمد فاروق حیدرکریں گے۔

بارش کی صورت میں بھی مرکزی عیدگاہ میں نماز عید اداکی جائے گی‘مرکزی سیرت کمیٹی نے انتظامات مکمل کرلیئے،علماء کرام،مشائخ عظام،،وزیراعظم ،وزراء حکومت‘اعلیٰ عدلیہ کے ججزصاحبان سمیت سیاسی و سماجی شخصیات اوربڑی تعدادمیں شہری شریک ہوں گے۔

(جاری ہے)

مرکزی سیرت کمیٹی کے سیکرٹری جنرل عتیق احمدرضاکے مطابق مرکزی سیرت کمیٹی نے حسب سابق مرکزی عیدگاہ میں عیدالفطرکے سب سے بڑے اجتماع کیلئے تیاریاں مکمل کر لی ہیںمرکزی سیرت کمیٹی کے سیکرٹری جنرل عتیق احمدرضانے ازخودمرکز ی عیدگاہ میں اجتماع عیدالفطر کے حوالہ سے انتظامات اور صفائی ستھرائی کے عمل کی نگرانی کی ۔

مرکزی عیدگاہ میں صفائی ستھرائی کے حوالہ سے میونسپل کارپوریشن کے کے کردارکومرکزی سیرت کمیٹی نے سراہاہے۔انہوںنے کہاکہ مرکزی عیدگاہ کے ساتھ اہل مظفرآباد کی سواسوسال سے زیادہ عرصہ کی نسبت اور ایک قلبی و روحانی تعلق قائم ہے‘ہمارے اجدادنے اس عیدگاہ کو آباد رکھا اور نسل در نسل اسی عیدگاہ سے مرکزی سیرت کمیٹی کے پلیٹ فارم سے محبت رسول ﷺ کافیض عام ہورہاہے،انشاء اللہ یہ سلسلہ جاری ہے اور تاروزقیامت جاری رہے گا۔

انہوںنے کہاکہ جامع مسجد خادم الحرمین الشریفین مرکزی عیدگاہ میں نماز جمعہ کا آغاز کرکے ہم نے ا سی عظیم سلسلہ کو آگے بڑھانے کی سعی کی ہے اور پہلی بار خواتین کے لئے باجماعت نماز تراویح کے بعد اب نماز جمعة المبارک میں شامل ہونے کا موقع فراہم کیاہے۔ انہوںنے کہاکہ جامع مسجد خادم الحرمین الشریفین مرکزی عیدگاہ کو دو عظیم نسبتیں حاصل ہیں ایک یہ کہ اس عظیم الشان مسجد کو مسجد نبوی شریف کی طرز پرتعمیر کیا جارہاہے اور دوسرا یہ کہ یہ وہی مقام ہے جہاں سے ڈوگرہ شاہی کے ظلم و تعدی کے دور سے ایک تسلسل کے ساتھ قال اللہ و قال رسول اللہ کا فریضہ انجام دیا جارہاہے،یہ اسی کا ثمرہے کہ آج مظفرآباد کی فضا فرقہ ورانہ ہم آہنگی کی سب سے بہترین مثال پیش کر رہی ہے۔

متعلقہ عنوان :