بھارت ،ْخاوند کے سامنے اہلیہ اور بیٹی کا گینگ ریپ ،ْ تحقیقات شروع

جمعہ جون 16:10

نئی دہلی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 جون2018ء) بھارت کے علاقے گایا میں ایک درجن سے زائد ملزمان نے ایک شخص کے سامنے اس کی 45 سالہ اہلیہ اور 14 سالہ بیٹی کو مبینہ طور پر گینگ ریپ کا نشانہ بنایا۔۔بھارتی میڈیا کے مطابق پولیس ذرائع نے بتایا کہ متاثرہ خاندان موٹر سائیکل پر سفر کررہا تھا کہ انہیں 9 افراد پر مشتمل ایک گروہ نے روکا اور ان سے 2 ہزار روپے اور جواہرات چھین لیے۔

پولیس افسر نے بتایا کہ ملزمان نے مرد کو ایک درخت کے ساتھ باندھ دیا ،ْ 3 ملزمان نے اس کے سامنے اس کی بیٹی اور اہلیہ کا گینگ ریپ کیا، جس کے بعد ملزمان فرار ہوگئے۔۔پولیس کے مطابق اس سے قبل مذکورہ گروہ نے اسی علاقے سے گزرنے والے 2 موٹر سائیکل سواروں کو بھی لوٹا اور انہیں درخت کے ساتھ باندھ دیا تھا۔

(جاری ہے)

واقعہ کی اطلاع ملتے ہی گایا کے سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس ایس پی) راجیو مشرا جائے وقوع پر پہنچے۔

پولیس آفیسر کا کہنا تھا کہ 9 میں سے 6 ملزمان ماسک پہنے ہوئے تھے اور متاثرین نے 2 ملزمان کو شناخت کرلیا ہے جبکہ دیگر ملزمان کی گرفتاری کیلئے کارروائی کا آغاز کردیا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ متاثرہ خاندان نے پولیس کو خاتون اور بیٹی کے ساتھ مبینہ گینگ ریپ کی شکایت درج کرادی ہے۔ایس ایس پی کا کہنا تھا کہ متاثرہ خاتون کو گایا منتقل کیا گیا ہے تاکہ اس کا میڈیکل کروایا جاسکے، وہ 4 بچوں کی ماں ہے اور ان کی ایک بیٹی گریجویشن مکمل کرچکی ہے۔

واقعہ کے بعد علاقے کے ایس ایچ او کے خلاف تحقیقات کا آغاز کردیا گیا۔ادھر این ڈی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق خاتون اور اس کی بیٹی کے گینگ ریپ میں ملوث ملزمان کی تعداد 20 تھی۔۔پولیس نے واقعہ کے بعد 17 مشتبہ افراد کو گرفتار کیا ہے، جن سے واقعے سے متعلق تفتیش کی جارہی ہے۔

متعلقہ عنوان :