بھارت، وزیر اعلیٰ کجریوال کا 3وزراء کے ساتھ گذشتہ 6روز سے دھرنا جاری

دہلی کو ریاست کا درجہ اور افسران کی ہڑتال ختم کرائی جائے، گورنر مودی کے اشاروں پر ناچنا بند کریں،دہلی کے عوام کی رائے کا احترام کیا جائے، وزیر اعلیٰ کجریوال

پیر جون 15:50

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 جون2018ء) نئی دہلی کے وزیر اعلیٰ کجریوال کا 3وزراء کے ساتھ گذشتہ 6روز سے دھرنا جاری ہے، دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دینے اور آئی اے ایس افسران کی ہڑتال ختم کرائی جائے، گورنر لیفٹیننٹ جنرل انل بیجل مودی کے اشاروں پر ناچنا بند کریں،،دہلی کے عوام کی رائے کا احترام کیا جائے۔۔بھارتی میڈیا کے مطابق دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دینے اور آئی اے ایس افسران کی ہڑتال ختم کرانے سے متعلق مطالبہ کرتے ہوئے دہلی کے لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل کی رہائش پر وزیراعلی کیجریوال اپنے 3 وزرا کے ساتھ گزشتہ 6 دن سے دھرنے پر بیٹھے ہیں ۔

ملک کی 4 ریاستوں آندھرا پردیش، کیرالہ، کرناٹک اور مغربی بنگال کے وزرائے اعلی گزشتہ روز کیجریوال سے ملاقات کرنا چاہتے تھے لیکن گورنر کی طرف سے اجازت نہ دیئے جانے پر چاروں وزرا نے کیجریوال کے گھر پر انکی اہلیہ سنیتا کیجریوال سے ملاقات کرکے مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔

(جاری ہے)

دہلی کے وزیر اعلی کیجریوال نے وزیراعظم کے دفتر پر الزام عائد کیا ہے کہ یہ سب ان کے اشاروں پر کام ہورہا ہے۔

مجھے نہیں لگتا کہ یہ فیصلہ لیفٹیننٹ جنرل کا خود کا ہے۔ ہوسکتا ہے کہ وزیراعظم کے دفتر سے منع کرنے کا حکم ملا ہوگا۔ ادھر مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتابنرجی نے واضح طور پر کہا کہ دہلی میں آئینی بحران پیدا ہوگیا ہے۔ اگر لیفٹیننٹ گورنر نے وقت نہیں دیا تو پھر کس کے پاس جائیں یہ حالات کسی کے ساتھ بھی ہوسکتے ہیں ۔ 4 ماہ سے دہلی میں کام بند پڑا ہے ۔ دہلی میں جو حالات ہیں اس سے ملک میں غلط پیام جارہا ہے۔ دہلی کے عوام کی رائے کا احترام کیا جانا چاہیئے۔