بھارت میں تیلگو فلموں میں کام کرنے والی خواتین کو امریکا میں جسم فروشی کیلئے استعمال کیے جانے کا اسکینڈل سامنے آگیا

امریکا میں مکروہ دھندہ کرنے والوں کے خلاف کارروائی کا آغاز کر دیاگیا ،ْ و فلموں کے ایک پروڈیوسر اور اس کی بیوی گرفتار ،ْ فرد جرم عائد

پیر جون 19:10

بھارت میں تیلگو فلموں میں کام کرنے والی خواتین کو امریکا میں جسم فروشی ..
ممبئی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 جون2018ء) بھارت میں تیلگو فلموں میں کام کرنے والی خواتین کو امریکا میں جسم فروشی کیلئے استعمال کیے جانے کا اسکینڈل سامنے آگیا جس کے بعد امریکا میں مکروہ دھندہ کرنے والوں کے خلاف کارروائی کا آغاز کر دیا گیا۔۔بھارتی میڈیا نے بتایا کہ تیلگو فلموں میں چھوٹے چھوٹے کردار ادا کرنے والی اداکاراوں کو مختلف کانفرنسوں اور ثقافتی پروگراموں کے بہانے امریکا بلا کر جسم فروشی کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔

شکاگو میں پولیس نے ایسا ہی ایک گروہ چلانے کے الزام میں تیلگو فلموں کے ایک پروڈیوسر اور اس کی بیوی کو گرفتار کرلیا ہے اور ان کے خلاف فرد جرم بھی عائد کر دی گئی ہے۔۔بھارتی میڈیا کے مطابق فلموں میں کام دلانے اور اضافی آمدن کیلئے ایکٹرسوں کو امریکا بھیجا جاتا تھا اور انہیں 2 سے 3 لاکھ روپے تک دیے جاتے تھے جس کا دارو مدار اداکارہ کی مقبولیت پر ہوتا ہے۔

(جاری ہے)

تیلگو فلموں کی اداکارہ سری ریڈی نے بھی تصدیق کی ہے کہ انہیں بھی امریکا میں جسم فروشی کے لیے پیش کش کی گئی تھی، جبکہ فلموں میں کام دلانے کے عوض بھی ایکٹرسوں کو امریکا میں جسم فروشی پر مجبور کیا جاتا ہے۔سری کا کہنا تھا کہ جسم فروشی کا دھندا کرنے والے گروہ نے حیدرآباد میں اپنے نمائندے بھی رکھے ہوئے ہیں جو مختلف ایکٹرسوں سے رابطے کرتے رہتے ہیں

متعلقہ عنوان :