الحدیدہ کی آزادی سے ایرانی ہاتھوں کو قطع کرنے کی راہ ہموار ہوگی‘ترجمان عرب اتحاد

الحدیدہ شہر اور اس کی بندرگاہ کو حوثیوں کے قبضے سے آزاد کرانا یمنی حکومت کا قانونی حق ہے‘کرنل ترکی المالکی

منگل جون 11:10

ریاض (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 جون2018ء) عرب اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے کہا ہے کہ یمن میں حوثی ملیشیا جھوٹے پروپیگنڈے کے ذریعے اپنے جانی نقصان کو چھپانے کی کوشش کررہی ہے۔ان کا کہنا ہے کہ الحدیدہ شہر کو آزاد کرانے کے لیے لڑائی میں اور صعدہ کے محاذ پر حوثیوں کا بھاری جانی نقصان ہوا ہے۔انھوں نے سوموار کو ایک نیوز کانفرنس میں کہا کہ اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی برائے یمن مارٹن گریفتھس حوثیوں کو الحدیدہ کی بندرگاہ کا کنٹرول حوالے کرنے پر آمادہ کرنے کی کوشش کرتے رہے ہیں لیکن حوثی جنگجوؤں نے ان کی درخواست کو یکسر نظر انداز کردیا ہے۔

ترجمان نے کہا کہ الحدیدہ شہر اور اس کی بندرگاہ کو حوثیوں کے قبضے سے آزاد کرانا یمنی حکومت کا قانونی حق ہے اور اس کی فوج کی ان کو واگزار کرانے کے لیے کارروائی اقوام متحدہ کی قرارداد نمبر 2216 کے عین مطابق ہے۔

(جاری ہے)

ان کا کہنا تھا کہ الحدیدہ کی آزادی سے ایرانی ہاتھوں کو قطع کرنے کی راہ ہموار ہوگی اور حوثیوں کو ملنے والے ایرانی ہتھیاروں کی اسمگلنگ کو روکا جاسکے گا۔

ترکی المالکی نے صحافیوں کو بتایا کہ یمنی فوج الحدیدہ کے ہوائی اڈے پر جلد دوبارہ مکمل کنٹرول حاصل کرنے والی ہی-انھوں نے عرب اتحاد کی جانب سے اس بات کی بھی تصدیق کی ہے کہ انسانی امداد مسلسل اور لڑائی کے باوجود الحدیدہ اور یمن کے دوسرے علاقوں میں پہنچ رہی ہے۔نیز عرب اتحاد یمن میں امدادی سامان کے داخلے کے لیے برّی ، بحری اور فضائی اجازت ناموں کے اجراء کا سلسلہ جاری رکھے گا۔